وزیر اعظم ساڑھے تین سال میں صرف مافیاز کی سنتے رہے ، سودی نظام سے نجات کے بغیر ملک ترقی نہیں کرسکتا:سراج الحق

وزیر اعظم ساڑھے تین سال میں صرف مافیاز کی سنتے رہے ، سودی نظام سے نجات کے بغیر ...
وزیر اعظم ساڑھے تین سال میں صرف مافیاز کی سنتے رہے ، سودی نظام سے نجات کے بغیر ملک ترقی نہیں کرسکتا:سراج الحق

  

شہدادپور(ڈیلی پاکستان آن لائن)امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق نے کہا ہے کہ وزیر اعظم ساڑھے تین سال میں صرف مافیاز کی سنتے رہے اور قوم کو اعلانات سےبہلاتےرہے،وفاقی وزراءمشیروں کی فوج ظفر موج صرف بول رہی ہے،عمل کا خانہ بالکل خالی ہے،پاکستان تحریک انصاف( پی ٹی آئی) حکومت اب تک اپنے کوئی تین وعدے پورے نہیں کر سکی،نظام کوئی بھی ہو نالائق اور نااہل افراد ملک نہیں چلا سکتے، ملک میں پارلیمانی اور صدراتی نظام کو بہت موقع مل چکا اب اسلامی نظام کی ضرورت ہے، گزشتہ عرصہ میں دعوؤں، وعدوں اور اعلانات کے باوجود صحت، تعلیم اور روزگار کے مسائل میں مزید اضافہ ہوا، وقت آگیا ہے کہ متحد ہوکر بے روز گاری، مہنگائی،جہالت، کرپشن اور استحصالی نظام کیخلاف جہاد کریں،سودی نظام سے نجات کے بغیر ملک ترقی نہیں کرسکتا،حکمرانوں نے آئی ایم ایف کے دباؤ میں آکر ایک گھنٹے میں 36 قانون پاس کرکے ایسٹ انڈیا کمپنی کی یاد تازہ کردی ہے،آئی ایم ایف کی نئی شرائط سے مہنگائی کا مزید طوفان آئیگا۔ہمارے تمام مسائل کا حل اسلامی نظام اور نظام مصطفیٰ ﷺ کے نفاذ میں ہے،شہید عظیم بلوچ کو اللہ تعالیٰ نے ان کی آرزو و تمنا کے مطابق شہادت کی موت دیکر اپنے پاس بلالیا،وہ ہر لحاظ سے ایک نظریاتی و آئیڈیل شخصیت تھے،شہیدعظیم بلوچ کےنقش قدم پر زندگی گزارنی ہے تو آج ہمیں اس اجتماع میں عہد کرنا چاہیے کہ اپنی بقیہ تمام زندگی اسلام کے نام پر قربان کرتے ہوئے حق و سچ کا ساتھ دینا ہوگا۔

شہدادپور میں سابق صوبائی نائب امیر محمد عظیم بلوچ شہید کی یاد میں احباب سندھ کنونشن سے صدارتی خطاب کرتےہوئےامیر جماعت نے کہا کہ 74 سال گزر گئے مگر ایک گھنٹہ کے لیےبھی یہاں اسلام نافذ نہیں ہوا،ملک آئی ایم ایف، ورلڈ بنک اور بین الاقوامی اور مالیاتی اداروں کے رحم وکرم پرہے،پاکستان کاہر بچہ دو لاکھ 56 ہزار کا مقروض ہے، گذشتہ 70سال کے قرض سے پی ٹی آئی کے ساڑھے تین سال کا تجاوز کر گیا جو کہ حکومتی کارکردگی پر ایک سوالیہ نشان ہے  ،عدالتوں میں انصاف نہیں ہے، ایک غریب آدمی تو ناکردہ گناہوں کی بھی سزا بھی بھگتا ہے مگر وزیر اعظم سپریم کورٹ میں اپنی حاضری بھی گناہ سمجھتا ہے یہاں غریب و امیر کے لیے الگ الگ قانون ہے۔اس سے ثابت ہوگیا کہ یہاں ایک نہیں دو پاکستان ہیں۔ جماعت اسلامی فرد کی نہیں نظام کی تبدیلی کے لیے جدوجہد کر رہی ہے۔جماعت اسلامی ظلم و ناانصافی مہنگائی اور سودی نظام کے خلاف ملک بھر میں دھرنے دے گی۔ مسائل کے حل کے لیے عوام جماعت اسلامی کا ساتھ دیں۔

انہوں نے کہاکہ عظیم بھائی نے کراچی تا کشمور سندھ کے چپے چپے پر دعوت دین کا کام کیا۔ ان کی موت نے بھی تحریک کو طاقت اور سمت دی ہے۔ سانس کے آخری قطرے اور سانس کے آخری لمحہ تک اقامت دین کے لیے جدوجہد کرنا عظیم بلوچ کی شہادت کا پیغام ہے۔ اسلامی جمعیت طلبہ کے ناظم اعلیٰ حمزہ محمد صدیقی نے کہاکہ وہ اپنی زندگی میں لوگوں کو جوڑا کرتے تھے یہ احباب کنونشن بھی اس کی گواہی دے رہا ہے۔ عظیم بلوچ کا پیغام بھی یہ ہے کہ ہم اپنی پوری زندگی اس تحریک کے ساتھ جوڑدیں گے اور خون کے آخری قطرے تک اقامت دین کے لیے جدوجہد جاری رہے گی۔ پاکستان اسلام کے نام پر بنا تھا اور اس کو اسلام کا قلعہ بنائیں گے۔

مزید :

قومی -