اسلام آباد میں لڑکے اور لڑکی کو ہراساں کرنے کے کیس میں شریک ملزم کی درخواست ضمانت مسترد

اسلام آباد میں لڑکے اور لڑکی کو ہراساں کرنے کے کیس میں شریک ملزم کی درخواست ...
اسلام آباد میں لڑکے اور لڑکی کو ہراساں کرنے کے کیس میں شریک ملزم کی درخواست ضمانت مسترد

  

اسلام آباد ( ڈیلی پاکستان آن لائن) اسلام آباد میں لڑکے اور لڑکی کو ہراساں کرنے کے کیس میں عدالت نے شریک ملزم کی درخواست ضمانت مسترد کر دی ۔

اسلام آباد میں متاثرہ لڑکے اور لڑکی کے بیان سے منحرف ہونے پر شریک ملزم نے بریت کی درخواست دائر کی تھی ، ایڈیشنل سیشن جج عطا ربانی نے شریک ملزم کی درخواست ضمانت  پر سماعت کی ۔

عدالت نے قرار دیا کہ ٹرائل حتمی مرحلے میں داخل ہو چکا ہے اس لئے درخواست ضمانت مسترد کی جاتی ہے ۔

واضح رہے کہ اسلام آباد میں ایک فلیٹ میں لڑکے اور لڑکی کو ہراساں کیا گیا تھا جس کے واقعے کی ملزمان نے ویڈیو بنائی جو کچھ عرصہ بعد وائرل ہوئی جس کے بعد انتظامیہ حرکت میں آئی  ۔ عدالتی کارروائیاں بھی شروع ہوئیں لیکن اچانک متاثرہ لڑکا اور لڑکی اپنے گواہوں سے منحرف ہو گئے ۔ 

متاثرین کے منحرف ہونے کے بعد  کیس کی پیروی وفاقی حکومت نے خود کرنے کا فیصلہ کیا ،  پاکستان تحریک انصاف کی پارلیمانی سیکرٹری ملیکہ بخاری نے ٹوئٹر پر جاری بیان میں کیس کی پیروی سے متعلق اعلان کیا تھا ، انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت نے پیروی کا فیصلہ متاثرہ لڑکی کے ملزمان کو نہ پہچاننے کے تناظرمیں کیا، ناقابل تردید ویڈیو اور فارنزک شواہد ریکارڈ پر موجود ہیں۔

انہوں نے کہا کہ خواتین کو ہراساں اور بے لباس کرنے والوں کو قانون کا سامنا کرنا ہوگا۔

مزید :

قومی -جرم و انصاف -