عرب ممالک کی فوری اقتدار چھوڑنے کی شرط پر بشارالاسد کو محفوظ راستہ دینے کی پیشکش

عرب ممالک کی فوری اقتدار چھوڑنے کی شرط پر بشارالاسد کو محفوظ راستہ دینے کی ...

  

دمشق(آن لائن) عرب ممالک نے فوری اقتدار چھوڑنے پر شام کے صدر بشار الاسد کو محفوظ راستہ دینے کی پیشکش کر دی ہے۔ یہ بات قطر میں عرب وزراءخارجہ اجلاس کے بعد قطری وزیر اعظم شیخ حمد بن جاسم آل ثانی نے بتائی۔ قبل ازیں دوحہ میں عرب وزراء خارجہ کے اجلاس سے خطاب میں انہوں نے کہا کہ اگر صدر بشار الاسد اقتدار سے فوری طور پر علیحدگی کے لیے تیار ہیں تو عرب ممالک انہیں محفوظ راستہ دینے کے لیے تیار ہیں۔انہوں نے کہا کہ عرب ممالک نے پہلی مرتبہ شامی اپوزیشن قوتوں اور فری آرمی سے مطالبہ کیا ہے وہ آپس میں متحد ہو جائیں اور قومی عبوری حکومت کی تشکیل کا اعلان کریں۔دوحہ میں عرب لیگ کے وزراءخارجہ اجلاس سے خطاب کے بعد میڈیا کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے قطری وزیر اعظم نے کہا کہ تمام عرب ممالک میں اس بات پر اتفاق رائے پایا جاتا ہے کہ اگر شامی صدر بشار الاسد اقتدار سے فوری علیحدہ ہونے کے لیے تیار ہوں تو انہیں محفوظ راستہ دیا جا سکتا ہے۔ قطری وزیر اعظم نے شام میں انسانی حقوق کی صورت حال پر نظر رکھنے کے لیے کوفی عنان کی سربراہی میں قائم مشن کو مزید با اختیار بنانے کا مطالبہ کیا اور کہا کہ امن مشن کو شام میں انتقال اقتدار کے مراحل کی نگرانی کے قابل بنانے کے لیے مزید فعال اور با اختیار بنانے کی ضرورت ہے۔قطری وزیر اعظم، جو کہ شام کے بارے میں عرب لیگ کی خصوصی کمیٹی کے سربراہ بھی ہیں، کا کہنا ہے کہ شام میں بحران کا حل صرف صدر اسد کی اقتدار سے علیحدگی ہے۔ خود صدر اسد بھی جانتے ہیں کہ جب تک وہ اقتدار میں ہیں خون خرابہ جاری رہے گا۔ انہوں نے کہا کہ صدر اسد کو اپنے ملک اور قوم کو بچانے کے لیے جرات مندانہ فیصلے کرنا ہوں گے۔ اقتدار سے علیحدگی فرار یا شکست نہیں بلکہ ایک جرات مندانہ فیصلہ ہے جو ملک کو بحران سے نکالنے کا واحد راستہ ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -