حکومت نے 12 سو ارب روپے قرضہ لیا جوملکی تاریخ میں سب سے بڑا قرض ہے: خالد پرویز

حکومت نے 12 سو ارب روپے قرضہ لیا جوملکی تاریخ میں سب سے بڑا قرض ہے: خالد پرویز

  

لاہور (وقائع نگار ) صدر آل پاکستان انجمن تاجران خالد پرویز نے سٹیٹ بنک کی جاری کردہ رپورٹ پر گہری تشویش ظاہر کی ہے کہ 30 جون 2012ءکو ختم ہونے والے مالی سال میں حکومت نے 12 سو ارب روپے قرض لیا جو ملکی تاریخ میں کسی بھی سال کے دوران لیا جانے والا سب سے بڑا قرض ہے۔ انہوں نے کہا حکومت ملکی معیشت بہتر بنانے کے لیے اور ملک میں سرمایہ کاری کے لےے سازگار ماحول اور سہولتیں فراہم کرکے آمدنی بڑھانے کی بجائے قرضوں پر انحصار کر رہی ہے جو خوفناک مہنگائی کا سب سے بڑا سبب ہے۔خالد پرویز نے کہا توانائی بحران، امن وامان کی بگڑتی صورتحال اور بے یقینی کی کیفیت سے ملکی و غیر ملکی سرمایہ دار نہ صرف سرمایہ کاری سے ہاتھ کھےنچ رہے ہیں بلکہ اپنا سرمایہ بیرون ملک بھی منتقل کر رہے ہیں جس سے کاروباری، صنعتی اور تجارتی سرگرمیاں ماند پڑ رہی ہیں۔ عجیب بات ہے کہ حکومت قرضے حاصل کرنے میں تو شیر ہے مگر ان وجوہات کے خاتمہ کی طرف توجہ نہیں دیتی جن کے باعث سرمایہ دار رقم لگانے سے ہچکچا رہے ہیں ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -