سحروافطار کے وقت لوڈشیڈنگ نہ کرنے کے اعلان دھرے کے دھرے‘گھر یلو خواتین پر یشان

سحروافطار کے وقت لوڈشیڈنگ نہ کرنے کے اعلان دھرے کے دھرے‘گھر یلو خواتین پر ...

  

لاہور(لیڈی رپورٹر) رمضان المبارک میں سحری افطار کے اوقات میں لوڈشیڈنگ نہ کرنے کے حکومتی اعلانات دھرے کے دھرے رہ گئے۔ سحری اور افطار اوقات میں بجلی و پانی کی لوڈشیڈنگ کی وجہ سے شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ سحری کے وقت بجلی نہیں ہوتی اور گیس کاپریشر بھی کم ہوتا ہے دو گھنٹے تو ایک روٹی پکانے میں لگ جاتے ہیں پورے گھر کی سحری کس طرح سے تیار کریں۔ صبح کے وقت سحری نہیں بنتی اور شام کے وقت افطاری کی تیاری نہیں ہوتی بجلی ، گیس کی لوڈشیڈنگ نے تو زندگی اجیرن بنا دی ہے۔ اوپر سے روز بروز بڑھتی مہنگائی نے فاقے کرنے پرمجبور کردیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار گھریلو خواتین عائشہ، عشرت، عمیہ، ثمینہ، زرگل، امامہ نے روز نامہ ”پاکستان“ سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ حکومت نے اعلان کیا تھا کہ رمضان المبارک میں سحری اور افطاری کے وقت بجلی کی بندش نہیں کی جائے گی بجلی کی بندش تو الگ بات ہے اس کے ساتھ ساتھ گیس کی بھی شدید قلت ہے انہوںنے کہا کہ یہ بات تو سمجھ سے باہر ہے کہ اتنی شدید گرمی میں بھی گیس کی قلت ہے۔انہوں نے کہا کہ سحری تو تیار کرنا تو ہوتی ہی ہے لیکن افطاری کے وقت بھی بجلی اور گیس نہیں ہوتی چھوٹے چھوٹے بچوں کے ساتھ انہیں شدید گرمی میں روزہ رکھنا اور پھر سحری اور افطاری تیار کرنا بڑا مشکل کام ہے انہوں نے کہا کہ ایک تو روزبروز بڑھتی ہو ئی مہنگائی نے ہماری کمر توڑ کر رکھ دی ہے اشیائے خورد نوش اور فروٹ کی اشیا کی قیمتیں روز بروز آسمان سے باتیں کرتی ہیں۔انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ رمضان المبارک میں بجلی و گیس کی لوڈشیڈنگ فوری بند کروائی جائے

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -