پنجاب حکومت نے 4ارب روپے سے زائد کی سبسڈی دی :پرویز ملک عمران نذیر

پنجاب حکومت نے 4ارب روپے سے زائد کی سبسڈی دی :پرویز ملک عمران نذیر

  

لاہور (رپورٹنگ ٹیم) منافع خوری اور گراں فروشی اور مہنگائی کو کم کرنے کا واحد طریقہ یہ ہے کہ ایسی اشیاءکا ہی عوام بائیکاٹ کردیں۔ حکومت پنجاب نے رمضان المبارک کے موقع پر 4ارب روپے سے زائد کی سبسڈی دی ہے۔ حکومت نے اونٹ کے منہ میں زیرہ کے برا بر سبسڈی دی ہے اس امر کا اظہار مختلف سیاسی جماعتوں کے راہنماﺅں نے ”پاکستان“ موبائل فورم میں اظہار خیال کرتے ہوئے کیا اس حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ ن لاہور کے صدر پرویز ملک اور جنرل سیکرٹری خواجہ عمران نذیر اور رکن پنجاب اسمبلی حاجی اللہ رکھا نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب حکومت نے 4ارب روپے سے زائد کی رمضان المبارک کے لئے سبسڈی دی ہے۔ صوبہ بھرمیں 212 سے زائد سستے رمضان بازار لگائے گئے ہیں آٹا، گھی، چینی پر رعائیتی قیمتیں دی گئی ہیں صرف لاہور 26مقامات پر سستے رمضان بازار لگائے گئے ہیں اور ایک ہزار فیئرپرائس شاپس قائم کی گئی ہیں 91 پرائس کنٹرول مجسٹریٹس گراں فروشوں کے خلاف کام کررہے ہیں۔ حاجی اللہ رکھا نے کہا کہ تین دنوںمیں 12 سو سے زائد مقامات پر اچانک چھاپے مارے گئے ہیں 27 سے زائد منافع خوروں کو ”اندر“ کیا گیا ہے اب عوام کا بھی فرض بنتا ہے کہ وہ جہاںگراں فروش دیکھیں حکومت کے ٹول فری نمبروں پر شکایت کریں فوری کارروائی کی جائے گی۔ سابق ضلع ناظم لاہور ادریس حنیف اور مسلم لیگ (ن) کے رہنما حاجی حنیف نے کہا کہ عوام کو ریلیف فراہم کرنا حکومت وقت کی ذمہ داری ہوتی ہے جو حکومت پوری کررہی ہے۔ چاروں صوبوں اور مرکزی حکومت نے یوٹیلٹی سٹوروں پر رمضان ریلیف پیکج دیا ہے وہ ناکامی ہے اصل خدمت خادم اعلیٰ پنجاب نے کی ہے اب ضلعی حکومت کے افسران کو اس ریلیف کو یقینی بنائیں۔ مسلم لیگ (ق) لاہور کے صدر یوسف احمد ملک نے کہا کہ پنجاب حکومت کے دعوے کیے ہیں عملی طور پر کچھ نہیں دیا، لاہور میں گراں فروش منافع خوری کو قابو کرنے میں پنجاب حکومت ناکام ہوگئی ہے۔ مسلم لیگ ہم خیال لاہور کے صدر میاں آصف نے کہا کہ منافع خاوری عروج پر ہے کسی جگہ عوام کو ریلیف نہیں مل رہا۔ اس حوالے سے شمالی لاہور کے معروف سیاسی سماجی شخصیت میاں اخلاق احمد ڈوگر نے کہا کہ ایسے لگ رہا ہے کہ شہری لاوارث ہوگئے ہیں جہاں آوے کا آوا بگڑا ہوا ہے کوئی کسی کو نہیں پوچھتا ہے وہ عوام کو کیوں لوٹ رہا ہے اگر آج بلدیاتی نظام موجود ہوتا تو ایسی صورتحال نہ ہوتی۔ انہوں نے کہا کہ دو چار گراں فروشوں اور منافع خوروں کو الٹا لٹکادیا جائے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -