عوامی نیشنل پارٹی کا سوئس حکام کو خط لکھنے سے متعلق واضح موقف دینے سے گریز

عوامی نیشنل پارٹی کا سوئس حکام کو خط لکھنے سے متعلق واضح موقف دینے سے گریز
عوامی نیشنل پارٹی کا سوئس حکام کو خط لکھنے سے متعلق واضح موقف دینے سے گریز

  

پشاور(مانیٹرنگ ڈیسک) حکومتی اتحادی جماعت عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) کے رہنماءزاہد خان نے کہاہے کہ اُن کی جماعت این آر او کے خلاف تھی تاہم خط لکھنے یا نہ لکھنے سے متعلق اُن کا کوئی تعلق نہیں اور واضح طورپر حکومتی موقف کے حق یا اُس کے خلاف بات کرنے سے گریز کیا ۔حکومت کی جانب سے این آر او عمل درآمد کیس میں سپریم کورٹ میں جمع کرائے گئے ”جواب “پر ردعمل دیتے ہوئے زاہد خان کاکہناتھاکہ کابینہ میں اُن کی جماعت سے صرف ایک وزیرہے اور وہ کابینہ کے فیصلوں کا پابند ہوتاہے ، اُس کا جماعت سے کوئی تعلق نہیں ۔اُنہوں نے کہاکہ اے این پی این آر او کے خلاف تھی تاہم خط لکھنایا نہ لکھنا پیپلزپارٹی کا کام ہے اور اُس سے متعلق دو مختلف رائے موجود ہیں اور حکومت کے خیال میں آرٹیکل 248کے تحت استثنیٰ حاصل ہے ۔ بار بار سوال کے باوجود اُنہوں نے واضح موقف دینے سے گریز کرتے ہوئے کہاکہ یہ معاملہ عدلیہ اور پیپلزپارٹی کے درمیان ہے تاہم تمام اداروں کو اپنے دائر ہ کار میں رہناچاہیے اور اگر نقصان ہوا تو سب اداروں کو نقصان ہوگا۔

مزید :

پشاور -اہم خبریں -