حکومت عمران خان کے مارچ سے دانش سے نمٹے گی، سعد رفیق

حکومت عمران خان کے مارچ سے دانش سے نمٹے گی، سعد رفیق

  

 اسلام آباد(ا ے این این) وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ ملک حالت جنگ میں ہے عمران خان فسادی مارچ ترک کر دیں،آپریشن ضرب عضب پر قوم کو تقسیم نہ کیا جائے،یوم آزادی کو متنازعہ نہ بنایا جائے،حکومت سے دنگل کے لئے کوئی اور دن چن لیں،مارچ پر حکومت طاقت نہیں دانش کا استعمال کرے گی،اس وقت پاک فوج ملک کی بقاءکی جنگ لڑ رہی ہے،متثرین کے زخموں پر نمک پاشی کی نہیں مرہم رکھنے کی ضرورت ہے،عمران خان کا کیا کہنا وہ نواز شریف کے عمرہ کی سعادت پر بھی اعتراض کر رہے ہیں،آزادی ٹرین مارچ شہر شہر جائے گی،اخراجات سرکار کی بجائے سپانسرز برداشت کریں گے۔صحافیوںسے گفتگوکرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ آزادی ٹرین مارچ میں چاروں صوبوں کی ثقافت کی نمائندگی ہوگی، تحریک پاکستان کے ہیروز اور قیام پاکستان کے حوالے سے دو گیلریزہونگی اس میں افواج پاکستان میں دشمن کے خلاف جنگوںمیں اور خاص طورپر دہشت گردی کے خلاف جنگ میں قربانیاں دی ہیں۔ ان کے حوالے سے لوگوں کو آگاہ کیاجائے گا۔ آئی ایس پی آر، لوک ورثہ، پاکستان نیشنل کونسل آف آرٹس،پی ٹی وی ،پاکستانی ریلویز مل کر کام کررہے ہیں۔ ہماری کوشش ہے کہ اس آزادی ٹرین کے اخراجات حکومت پر نہ پڑیں اس کے لئے ہم سپانسپر شپ لینے کی کوشش کررہے ہیں۔مجھے یقین ہے کہ اس کے تمام اخراجات ہمارے سپانسپر برداشت کرینگے۔ یہ ٹرین شہر شہر جائے گی جس جگہ پر ٹرین رکے گی وہاں قیام پاکستان کے لئے جدوجہد،دہشت گردی کے خلاف جنگ کے حوالے سے نوجوانوں کوآگاہ کیاجائے گا۔وہاں لوک سنگر بھی موجود ہونگے جو اپنے فن کا مظاہرہ کرینگے۔ انہوں نے کہاکہ عمران خان کے لانگ مارچ پر حکومت طاقت کا استعمال نہیں بلکہ دانش استعمال کریگی۔ ہمارا کوئی ارادہ نہیں کہ ہم کسی کو طاقت سے روکیں۔عمران خان کو بار بار مشورہ دے رہے ہیں کہ 68 واں یوم آزادی اور جاری ضرب عضب آپریشن کے موقع پر پاکستانی قوم کو تقسیم نہ کریں اور فسادی مارچ ترک کردیں۔انہوںنے کہاکہ عمران خان کو حکومت کے ساتھ دنگل کرنے کا بہت شوق ہے تو آزادی کے دن کا انتخاب نہ کریں اور انتظار کریں کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ ختم ہوجائے کیونکہ دنیا کی کوئی بھی قوم حالت جنگ میں ہو تو لوگ اپنے اختلافات بالائے طاق رکھ کر جنگ کی کامیابی کے لئے کوشش کرتے ہیں۔انہوںنے کہاکہ عمران خان ایک انوکھے لاڈے لیڈر ہیں ہم ان سے اپیل کرتے ہیں کہ پاکستان کی یوم آزادی کو متنازعہ نہ بنائیں،قوم حالت جنگ میں ہے ،جو لوگ دھرنوں،ریلیوں اور حکومت گرانے کی باتیں کرتے ہیں،یہ باتیں چند ماہ بعد بھی کرسکتے ہیں۔دہشت گردی کےخلاف جنگ لڑ جارہی ہے یہ وقت حکومت کی ٹانگیں کھینچنے کا نہیں۔ انہوںنے کہاکہ نقل مکانی کرنے والے لاکھوں کی تعداد میں آچکے ہیں۔عمران خان کے بیان پر افسوس ہے کہ وہ کہتے ہیں کہ آئی ڈی پیز کے حوالے سے خیبر پختونخو ا حکومت کی کوئی ذمہ داری نہیں ہے۔ وزیر ریلوے نے کہاکہ آئی ڈی پیز کی مدد نہ صرف وفاقی اور صوبائی حکومت کی بلکہ پوری قوم کی ذمہ داری ہے کیونکہ آئی ڈی پیز نے ملک کی خاطر اپنا گھر بار چھوڑا تاکہ دہشت گردی کے خلاف آپریشن ضرب عضب کو کامیاب بنایاجاسکے۔ یہ وقت آئی ڈی پیز کی دلجوئی کرنے کا ہے ان کے زخموں پر نمک پاشی کرنے کا نہیں۔ این ایف سی ایوارڈ کے تحت 17 ارب روپے خیبر پختونختواحکومت کو ملے ، میں امیر جماعت اسلامی سے درخواست کرونگا کہ خیبر پختونخوا حکومت سے پوچھیں کہ 17 ارب روپے دہشت گردی کے خلاف جنگ کے لئے دیئے تھے کہ وہ کہاں خرچ کئے

خواجہ سعد رفیق

مزید :

صفحہ آخر -