واپڈا نے گزشتہ مالی سال میں 31 ارب 8کروڑ یونٹ پن بجلی مہیا کی

واپڈا نے گزشتہ مالی سال میں 31 ارب 8کروڑ یونٹ پن بجلی مہیا کی

  

لاہور (کامرس رپورٹر) واپڈا نے مالی سال 2013-14 ءکے دوران نیشنل گرڈ کو 31 ارب 8کروڑ یونٹس سستی پن بجلی مہیا کی، جوکہ مالی سال 2012-13 ءکے مقابلے میں ایک ارب 52کروڑ یونٹس زیادہ ہے۔ مالی سال2012-13 ءکے دوران نیشنل گرڈ کو 29ارب 56کروڑ یونٹ بجلی مہیا کی گئی تھی۔ پن بجلی کی یہ اضافی مقدار ہائیڈل پاور سٹیشنوں کے مو¿ثر آپریشن اور دیکھ بھال ، آبی ذخائر میں پانی کی اضافی مقدار اور منگلا ڈیم ریزنگ پراجیکٹ سمیت حال ہی میں مکمل ہونے والے دیگر پن بجلی منصوبوں کی وجہ سے ممکن ہوئی ہے ۔نیشنل گرڈ کو کم لاگت پن بجلی کی اس اضافی مقدار کے باعث قومی خزانے کو 24ارب 38کروڑ روپے کی بچت ہوئی جو اُس رقم کے مساوی ہے جو اُتنی ہی مقدار میں مہنگے درآمدی تیل سے بجلی پیدا کرنے کیلئے خرچ کرنا پڑتی۔پن بجلی کی پیداوار نے صارفین کے لئے بجلی کے نرخ کو نچلی سطح پر رکھنے میں کس درجہ اہم کردار ادا کیا ، اس بات کا اندازہ اس امر سے لگایا جاسکتا ہے کہ واپڈا کی مالی سال 2013-14ءکیلئے پن بجلی کی اوسطاً قیمت محض ایک روپیہ 50 پیسے فی یونٹ رہی جبکہ درآمدی فرنس آئل سے پیدا ہونے والی بجلی کی اوسطاً قیمت 16روپے فی یونٹ اور صارفین کیلئے بجلی کا اوسط نرخ 11روپے 50پیسے فی یونٹ رہا۔مالی سال 2013-14ءکے دوران پیدا ہونے والی پن بجلی کی تفصیلات کے مطابق، ملک کے سب سے بڑے تربیلا ہائیڈل پاور سٹیشن سے 15ارب13کروڑ یونٹ بجلی پیدا کی گئی جبکہ مالی سال2012-13 کے دوران 14ارب 75کروڑ یونٹ بجلی پیدا ہوئی۔ منگلا ہائیڈل پاور سٹیشن سے 5ارب2 7کروڑ یونٹ بجلی حاصل کی گئی جبکہ مالی سال 2012-13 میں4ارب 57کروڑ یونٹ بجلی پیدا کی گئی ۔بجلی کی بقیہ پیداوار دیگر پن بجلی منصوبوں سے حاصل کی گئی۔

واپڈا پن بجلی

مزید :

صفحہ آخر -