سانحہ ماڈ ل ٹاﺅن، حلف نامے جمع کرانیوالے پولیس افسر، اہلکار آج جرح کیلئے طلب

سانحہ ماڈ ل ٹاﺅن، حلف نامے جمع کرانیوالے پولیس افسر، اہلکار آج جرح کیلئے طلب

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )سانحہ ماڈل ٹاﺅن کی انکوائری کرنے والے جوڈیشل ٹربیونل نے سابق ڈی آئی جی آپریشنز اور 9 ایس پیز سمیت حلف نامے جمع کرانے والے پولیس افسروں اور اہلکاروں کو آج جرح کے لئے طلب کر لیا۔لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس علی باقر نجفی پر مشتمل جوڈیشل ٹربیونل نے سانحہ ماڈل ٹاﺅن سے متعلق سترہویں دن کی کارروائی شروع کی تو جوائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم کے ممبر سیف المرتضی نے پیش ہو کر بتایا کہ سپیشل برانچ نے 11اور 14 جون کو پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ طاہر القادری کی پاکستان آمد کے حوالے سے سکیورٹی سے متعلق اپنی رپورٹ پنجاب حکومت کو بھجوائی تھی، انہوں نے بتایا کہ سپیشل برانچ نے ازخود اپنے ذرائع سے یہ رپورٹ تیار کروائی تھی اسے کسی نے حکم نہیں دیا تھا، ڈائریکٹر انیٹلی جنس بیورو ساجد بلال الرحمان اور ڈپٹی ڈائریکٹر آئی ایس آئی اسد علی خان نے ٹربیونل کو بتایا کہ انہیں سانحہ ماڈل ٹاﺅن کے حوالے سے کوئی پیشگی اطلاع نہیں تھی اور نہ ہی انہوں نے پنجاب حکومت کو اس حوالے سے کوئی پیشگی رپورٹ بھجوائی تھی، ڈپٹی ڈائریکٹر آئی ایس آئی نے ٹربیونل نے دس موبائل فون نمبرز کی تفصیلی تجزیاتی رپورٹ جمع کراتے ہوئے استدعا کی کہ باقی رہ جانے والے دس موبائل نمبرز کی تجزیاتی رپورٹ جمع کرانے کیلئے انہیں کم از کم چار دن کی مہلت دی جائے جس پر جسٹس علی باقر نجفی نے کہا کہ جتنی جلدی ممکن ہو سکے یہ رپورٹ ٹربیونل میں جمع کرائیں،ایڈووکیٹ جنرل پنجاب محمد حنیف کھٹانہ عدالت کی توجہ ان کے سابق حکم کی طرف مبذول کرواتے ہوئے کہا کہ آئی جی پنجاب خان بیگ کے اچانک تبادلے سے متعلق کیبنٹ سیکرٹری حکومت پنجاب کی بجائے سیکرٹری اسٹیبلشمنٹ آف پاکستان سے رپورٹ طلب کی جانی چاہیے تھی جس پر فاضل ٹربیونل نے اپنے پہلے حکم میں تصیح کرتے ہوئے سیکرٹری اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کو ہدایت کی کہ سابق آئی جی پنجاب خان بیگ کے اچانک تبادلے کی وجوہات بیان کی جائیں، ٹربیونل نے ماڈل ٹاﺅن آپریشن سے متعلق حلف نامے جمع کروانے والے پولیس افسروں اور اہلکاروں پر جرح کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے انہیں آج 24جولائی کو ساڑھے 11:00بجے پیش ہونے کا حکم دیدیا، اب تک سابق ڈی آئی جی آپریشنز رانا عبدالجبار اور نو ایس پیز کے علاوہ متعدد ایس ایچ اوز اور اہلکار اپنے حلف نامے ٹربیونل کو جمع کرا چکے ہیں۔علاوہ ازیں ڈی ایس پی لیگل اور جوائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم کے رکن سیف المرتضی نے ایف آئی آر کے اندراج کے لئے ادارہ منہاج القرآن کے ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن کی طرف سے تھانہ فیصل ٹاﺅن میں دی جانے والی درخواست کی فوٹو کاپی بھی ٹربیونل کو پیش کی جسے ریکارڈ کا حصہ بنا لیا گیا۔گزشتہ روز ایک نجی ٹی وی چینل سے نمائندے میاں داﺅ نے سانحہ ماڈل ٹاﺅن کے حوالے سے سی ڈی ٹربیونل میں پیش کی اسے بھی ریکارڈ کا حصہ بنا لیا گیا۔

جرح کیلئے طلب

مزید :

صفحہ آخر -