نوجوان پاکستانی لڑکی نے ایک ایسے میدان میں جھنڈے گاڑ دیئے جسے صرف مردوں کیلئے مخصوص سمجھا جاتا تھا ، کیا کیا؟ جان کر آپ کو بھی حیرت ہوگی

نوجوان پاکستانی لڑکی نے ایک ایسے میدان میں جھنڈے گاڑ دیئے جسے صرف مردوں ...
نوجوان پاکستانی لڑکی نے ایک ایسے میدان میں جھنڈے گاڑ دیئے جسے صرف مردوں کیلئے مخصوص سمجھا جاتا تھا ، کیا کیا؟ جان کر آپ کو بھی حیرت ہوگی

  

کراچی(نیوزڈیسک) کہاجاتا ہے کہ ویڈیو گیمزکھیلنے کے مرد بہت شوقین ہوتے ہیں لیکن سعدیہ بشیر ایک ایسی پاکستانی لڑکی ہے جس نے ویڈیوگیمز میں دنیا بھر میں نام بناکر ملک کا سر فخر سے بلند کردیا ہے۔بچپن ہی سے سعدیہ کو گیمز کھیلنے کا شوق تھا اور وہ اپنے بھائیوں کے ساتھ نزدیکی مارکیٹ میں جایا کرتی تھی جہاں وہ گیمز کا شوق پورا کرتی تھی۔وہ ان گیمز کی اس حد تک شوقین تھی کہ وہ سوچنے لگیکہ وہ خود یہ گیمز بنائے گی اور اپنا شوق پورا کرے گی۔فیصل آباد میں بڑھنے والی سعدیہ کے گھر والوں کے لئے یہ ایک خواب تھا لیکن انہوں نے کسی نہ کسی طرح اس کی تعلیم جاری رکھی اور اس نے اسلام ااباد کے کامسیٹ سے ماسٹرز سے انفارمیشن ٹیکنالوجی کی ڈگری مکمل کرلی۔اس نے ابتداءمیں فوٹوشاپ اور فلیش سیکھااور ساتھ ہی اینی میشن اور گرافک ڈیزانئنگ پر ہاتھ صاف کیا۔اس نے اپنی گریجویشن کے پراجیکٹ کے لےئے Unreal Development Kitکا استعمال کرتے ہوئے شوٹنگ گیم بنائی جسے بہت پذیرائی ملی۔اس نے اپنے بہنوئی کے ساتھ مل کر PixelArt Games Academyکی بنیاد رکھی ۔اب مزید چھ اراکین کی ٹیم کے ساتھ مل کر وہ گیم ڈویلپمنٹ اور دیگر ایسے پراجیکٹ مکمل کررہے ہیں۔سعدیہ اس کمپنی کے ساتھ مل کر کئی بین الاقوامی گیمز کے میلوں میں شرکت کرچکی ہے اور اسے دنیا بھر میں پذیرائی بھی ملی ہے۔

وہ پاکستانی جس نے گوروں کو لوٹ لوٹ کر پاکستان میں دولت کا انبار لگالیا، محل بھی بنالیا، طریقہ کیا اپنایا؟ ایسا انکشاف کہ گورے چکرا کر رہ گئے

سعدیہ کا کہنا ہے کہ اب وقت تبدیل ہوچکا ہے اور اب خواتین آئی ٹی کے میدان میں بہت نام بنارہی ہیں۔اس کاکہنا ہے کہ لڑکیوں کو چہایے کہ وہ ویڈیو گیمز کی انڈسٹری میں قدم رکھیں کہ اس طرح وہ نہ صرف اپنا شوق پورا کرسکیں گی بلکہ ان کا ذریعہ آمدن بھی بڑھے گا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس