اسرائیلی فوج نے فلسطینی رہنماء کو بیٹوں سمیت گرفتار کرلیا، نامعلوم مقام پر منتقل کردیا

اسرائیلی فوج نے فلسطینی رہنماء کو بیٹوں سمیت گرفتار کرلیا، نامعلوم مقام پر ...

النقب (این این آئی)فلسطین کے جنوبی علاقے جزیرہ نما النقب کے صہیونی جبر کے شکار فلسطینی قصبے العراقیب کے ایک مقامی سرکردہ فلسطینی رہنماء کو ان کے دو بیٹوں سمیت اسرائیلی فوج نے حراست میں لے لیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق العراقیب میں اسرائیلی فوج نے فلسطینی شہریوں کے عارضی گھروں کی مسماری اور اراضی ہتھیانے کا ایک نیا آپریشن شروع کردیا ہے جس پر مقامی فلسطینی آبادی اور اسرائیلی فوج کے درمیان تصادم ہوا ہے اور حالات کافی کشیدہ بتائے جاتے ہیں۔اطلاعات کے مطابق گزشتہ روز اسرائیلی فوج کی بھاری تعداد نے بلڈوزروں کے ہمراہ العراقیب گاؤں پر دھاوا بولا اور مقامی رہ نما الشیخ صیاح الطوری اور ان کے دو بیٹوں عزیز اور عادل کو حراست میں لینے کے بعد نامعلوم مقام پر منتقل کردیا ہے۔ صہیونی فوج نے تلاشی کے دوران مزید 4فلسطینی شہریوں کی گرفتاری کیلئے چھاپے مارے مگرانہیں حراست میں نہیں لیا جا سکا ہے۔

قابض فوج نے ان کی گرفتاری کے وارنٹ جاری کرتے ہوئے انہیں فوری طورپر حکام کے سامنے پیش ہونے کے نوٹس جاری کئے گئے ہیں۔مقامی فلسطینی سماجی کارکن سلیم العراقیب نے بتایا کہ صہیونی فوج نے قصبے میں مکانات کی مسماری کا ایک نیا آپریشن شروع کردیا ہے۔ اسرائیلی فوج نے گزشتہ 6روز سے العراقیب کا محاصرہ جاری رکھا ہوا ہے اور اس دوران فلسطینی اراضی کی کھدائی بھی کی گئی ہے۔اسرائیل جنوبی فلسطین کے ان عرب دیہاتوں کے باشندوں کو صدیوں سے وہاں قیام پذیر ہونے کے باوجود غیر ریاستی باشندے قرار دے کروہاں سے نکالنا اوران کی املاک پر قبضہ کرنا چاہتا ہے۔العراقیب جزیرہ نما النقب کی ان 51 بستیوں میں سے ایک ہے جنہیں صہیونی حکومت نے غیرقانونی قرار دے رکھا ہے اور وہاں پر رہنے والوں کے کچے مکانات اور جھونپڑیاں آئے روز مسمار کی جاتی ہیں۔ مجموعی طورپر جزیرہ النقب میں اڑھائی لاکھ فلسطینی عرب بدو آباد ہیں۔ اسرائیل ان فلسطینیوں کو غیرقانونی باشندے قرار دیتا ہے۔

مزید : عالمی منظر