چین نے بحیرہ جنوبی چین کوسیاحتی مقام مقام بنانے کا اعلان کر دیا

چین نے بحیرہ جنوبی چین کوسیاحتی مقام مقام بنانے کا اعلان کر دیا

بیجنگ (نیوز ڈیسک) امریکا بہادر بحیرہ جنوبی چین سے چینی اثر و رسوخ کم کرنے کے خواب دیکھ رہا تھا کہ چین نے یہ اعلان کر کے اسے مزید آگ بگولا کر دیا ہے کہ اس سمندر کو ایک مقبول سیاحتی مقام بنایا جائے گا اور لاکھوں چینی سیاح اس کی سیر کو جایا کریں گے۔ اخبار چائنہ ڈیلی کی رپورٹ کے مطابق چین کی تین سرکاری کمپنیاں بحیرہ جنوبی چین کو خطے کا مقبول ترین سیاحتی مقام بنانے کے لئے سرگرم ہوگئی ہیں اور یہ کمپنیاں تقریباً پانچ سے آٹھ کروز بحری جہاز اور ہوائی جہاز خریدنے کی تیاری کررہی ہیں تاکہ جلد از جلد سیاحوں کو بحیرہ جنوبی چین لیجانے کا اہتمام کیا جاسکے۔ رپورٹ کے مطابق یہ کمپنیاں کوسکو شپنگ، چائنہ نیشنل ٹریول سروس، کروک کارپوریشن اور چائنہ کمیونیکیشن کنسٹرکشن کمپنی لمیٹڈ ہیں، جو کہ مشترکہ طور پر سانیہ انٹرنیشنل کروز ڈویلپمنٹ کمپنی لمیٹڈ کے نام سے نئے منصوبے کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کے لئے کام کر رہی ہیں۔ فی الحال تو بحیرہ جنوبی چین میں صرف جنگ کے سائرن سنائی دے رہے ہیں لیکن چینی میڈیا کا کہنا ہے کہ چینی کمپنیاں اس سمندر میں مصنوعی جزائر پر نئے ہوٹل، بنگلے، ڈیوٹی فری شاپنگ سنٹر، کمرشل پارک اور دیگر تفریحی سہولیات قائم کریں گی جس کے نتیجے میں یہ خطے کا مقبول ترین سیاحتی مقام بن جائے گا۔ چینی میڈیا کا کہنا ہے کہ چونکہ سیاح کروزبحری جہازوں میں بحیرہ جنوبی چین جائیں گے لہٰذا ان کی خدمت کے لئے خوبصورت خواتین میزبان موجود نہیں ہوں گی البتہ انہیں مختلف جزائر پر چین کی دلکش فوجی خواتین خوش آمدید کہنے کے لئے ضرور تیار ہوں گی، جو موسیقی کے آلات کے علاوہ زمین سے فضا میں مار کرنے والے میزائلوں سے بھی لیس ہوں گی۔ سانیہ انٹرنیشنل کروز کمپنی کے چیئرمین لیو جونلی یہ اعلان بھی کرچکے ہیں کہ سیاحوں کو اب اور انتظار نہیں کرنا پڑے گا کیونکہ پہلا کروز شپ رواں ماہ کے آخر میں بحیرہ جنوبی چین کی طرف روانہ ہوجائے گا۔

مزید : صفحہ آخر