دلفریب بیانات صرف دھوکہ ہیں، حکمران کشمیر کا پاکستان کا حصہ بنانے میں سنجیدہ نہیں: سراج الحق

دلفریب بیانات صرف دھوکہ ہیں، حکمران کشمیر کا پاکستان کا حصہ بنانے میں سنجیدہ ...

لاہور (خبر نگار خصوصی)امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ اگر پاکستان کے سابقہ اور موجودہ حکمران سنجیدگی کے ساتھ مسئلہ کشمیر کے حل کی کوشش کرتے تو اب تک اس کا کوئی نتیجہ ضرور سامنے آتا۔ن خیالات کا اظہار انہوں نے منصورہ میں کارکنان کی تربیتی ورکشاپ کے چوتھے روز خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ اگر پاکستانی حکمران کشمیری عوام کی سرپرستی کرتے تو بھارت کو اس طرح ان کی زندگیوں سے کھیلنے کی جرأت نہ ہوتی اور کشمیر میں جدوجہد آزادی اپنی کامیابی کے قریب ہے ۔ سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ کشمیر پاکستان ضرور بنے گا مگرموجودہ حکمرانوں کے ہوتے ہوئے ایسا ہوتا نظر نہیں آتا۔کشمیر حکمرانوں کی کسی ترجیح میں نظر نہیں آرہا ۔ مودی کے ساتھ ساڑھیوں اور آموں کے تحائف کے تبادلے کرکے حکمران کشمیریوں کے زخموں پر نمک پاشی کررہے ہیں ۔حکومتی رویے نے ثابت کیا ہے کہ کشمیر کا مسئلہ حکمرانوں کا نہیں پاکستانی قوم اور کشمیریوں کا ہے۔حکمران دلفریب بیانات سے محض عوام کو دھوکہ دینے کی کوشش کررہے ہیں ۔سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ قومی دولت لوٹنے والے احتساب سے بچ نہیں سکتے ،عوام چوروں کے ساتھ تمام حسابات چکانے کیلئے تیار اوربے قرارنظر آتے ہیں ،کرپشن کی گنگا میں ہاتھ دھونے والوں کے پاسپورٹ اور جائیدادیں ضبط ہونگی اور انہیں ملک سے فرار کا موقع نہیں دیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم کے لئے انتہائی سنہری موقع ہے کہ وہ اپنے آپ کو اور اپنے خاندان کو احتساب کیلئے پیش کردیں تاکہ ان کی آڑ میں قومی دولت لوٹنے والے مگرمچھوں کوبچ نکلنے کا بہانہ نہ مل سکے ۔

مزید : صفحہ آخر