نوجوان لڑکے لڑکیوں کی پارٹی کی یہ تصویر کس عرب ملک سے آئی ہے؟ جواب ایسا کہ آپ نام تصور بھی نہیں کرسکتے

نوجوان لڑکے لڑکیوں کی پارٹی کی یہ تصویر کس عرب ملک سے آئی ہے؟ جواب ایسا کہ آپ ...
نوجوان لڑکے لڑکیوں کی پارٹی کی یہ تصویر کس عرب ملک سے آئی ہے؟ جواب ایسا کہ آپ نام تصور بھی نہیں کرسکتے

  

دمشق(مانیٹرنگ ڈیسک) شام کا ذکر آتے ہی جنگ سے تباہ حال کسی ملک کا تصور ذہن میں ابھرتا ہے جہاں کسی آزادی سے سانس لینا بھی محال ہو، مگر ایسا بالکل نہیں ہے۔ شام میں بھی لوگ دیگر ممالک کی طرح زندگی سے لطف اندوز ہوتے ہیں اور پارٹیوں کا اہتمام کرتے ہیں۔ ایسی ہی ایک پارٹی شام کے ساحلی شہر لتاکیہ میں ساحل سمندر پر ہوئی جس کی تصاویر نے دنیا کو شام کے دوسرے رخ سے روشناس کروایا ہے۔برطانوی اخبار ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق اس پارٹی میں درجنوں مرد و خواتین شامل تھے جو ساحل کی ریت پر رقص کر تے رہے۔ ان تصاویر سے لگتا ہے کہ شاید یہ پارٹی کسی مغربی ملک کے ساحل پر ہو رہی ہو، کیونکہ ان میں لگ بھگ تمام مردوں نے محض گھٹنوں تک زیرجامے پہن رکھے تھے اور خواتین بھی جدید مغربی لباس میں ملبوس تھیں اور یہ سب گھل مل کر رقص کر رہے تھے۔

رپورٹ کے مطابق تمام دن یہ افراد ساحل پر دھوپ سے بچانے والی چھتریوں کے نیچے لیٹ کر ایک دوسرے سے گپ شپ کرتے رہے اور شیشہ پیتے رہے۔ جب دن کچھ ٹھنڈا ہوا تو یہ سمندر میں نہانے کے نکلے اور سورج غروب ہونے سے قبل ساحل پر رقص کی محفل جما لی۔شام کا یہ ساحلی شہر جنگ کا میدان بنے شہر الیپو سے محض 110میل کے فاصلے پر واقع ہے۔الیپو گزشتہ 2ہفتے سے حکومتی افواج کے محاصرے میں ہے جنہوں نے شہر میں موجود باغیوں کی رسد روکنے کے لیے شہر کو جانے والے تمام راستے بند کر رکھے ہیں اور شہر پربلاامتیاز بمباری کر رہی ہے جس سے اکثر شہری نشانہ بن رہے ہیں۔ گزشتہ دنوں بمباری میں 15افراد ہلاک ہوئے جن میں 6بچے بھی شامل تھے۔الیپو2012ءکے وسط سے دو ٹکڑوں میں بٹ چکا ہے جس کے مغربی حصے پر حکومتی افواج جبکہ مشرقی حصے پر باغیوں کا قبضہ ہے۔حکومتی افواج کے محاصرے کے باعث شہر کے مشرقی حصے میں شہریوں کے لیے غذا، ادویات و دیگر ضروریات زندگی ناپید ہو چکی ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس