واسا کی اہم شعبے آؤٹ سورس کرنے کی منصوبہ بندی ، کمیٹی تشکیل دیدی گئی

واسا کی اہم شعبے آؤٹ سورس کرنے کی منصوبہ بندی ، کمیٹی تشکیل دیدی گئی

لاہود(جاویداقبال)واسا نے اہم شعبے آؤٹ سورس کرنے کی منصوبہ بندی کر لی ہے جس کی تیاریاں شروع کر دی گئی ہیں جس کے لیے ایم ڈی واسا زاہد عزیز نے ڈی ایم ڈی فنانس قدیر خان کی سربراہی میں تین رکنی کمیٹی تشکیل دے دی ہے .یہ کمیٹی ایک ماہ کے اندر تین شعبے پرائیویٹ کمپنیوں کو ٹھیکہ پر دینے کو یقینی بنائیں گی اور پیشکش کے لیے ٹینڈر بھی جاری کریں گی. ذرائع کا کہنا ہے کہ آغاز میں شعبہ ریوینیو کو آؤٹ سورس کیا جا رہا ہے جس کیلیے پانی کے بلوں کی ڈسڑیبوشن کا نظام پرائیویٹ کمپنی کے حوالے کرنے کی تیاریاں شروع کی گء ہے. یہ کام دو مرحلوں میں مکمل کیا جائے گا پہلے فیز میں کمرشل اور انڈسریل کنیکشنوں کا کام آؤٹ سورس کیا جا رہا ہے جس کی کامیابی کی صورت میں گھریلو بلوں کی ڈسڑیبوشن کا کام بھی پرائیویٹ شعبے کے حوالے کر دیا جائے گا. جبکہ آخری مرحلے میں ریکوری کا کام بھی پرائیویٹ شعبے کے حوالے کرنے پر غور کیا جا رہا ہے. ذرائع کا کہنا ہے کہ اسی طرح ایم ڈی نے پانی کے نئے کنکشن اور ٹیوب ویلوں کی خراب ہونے کی صورت میں مرمت کا کام بھی پرائیویٹ کرنے کا حکم جاری کر دیا ہے. آخری مرحلے میں گٹروں کے مین ہولوں کی نگرانی کا کام بھی پرائیویٹ کر دیا جائے گا. ذرائع کا کینا ہے کہ اس حوالے سے گزشتہ روز ہونے والے اجلاس میں ان فیصلوں کی منظوری دی گء اجلاس کی صدارت ایم واسا زاہد عزیز نے ک. جس میں ڈی ایم ڈی فنانس ڈاریکٹر ریونیو اور دیگر افسر شریک ہوئے.اس موقع پر ایم ڈی نے کہا کہ تمام معملات کی خود نگرانی کروں گا آؤٹ سورس کرنے کا طریقہ کار شفاف طریقے سے مکمل کیا جا ئے میرٹ اور قانون کو ہر صورت یقینی بنایا جائے اور اچھی شہرت کی حامل کمپنیوں کو ٹھیکے دئے جائیں.اس پر نماء4 ندہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے ایم ڈی زاہد عزیز مے مزکورہ شعبہ جات کو آؤٹ سورس کرنے کی تصدیق کی اور کہا کہ اس اقدام سے کروڑوں سالانہ بچت ہو گی اور کام میں بھی تیزی آئے گی.

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...