علماء کا دہشت گردی ،انتہاپسندی کیخلاف بھر پور جدوجہد کا اعلان

علماء کا دہشت گردی ،انتہاپسندی کیخلاف بھر پور جدوجہد کا اعلان

لاہور(نمائندہ خصوصی)علماء کا دہشت گردی ،انتہاپسندی کیخلاف بھر پور جدوجہد کا اعلان ۔ آپریشن رد الفساد کی کامیابی کیلئے پاک فوج اور قومی سلامتی کے اداروں کے ساتھ ہر سطح پر تعاون کیا جائے گا۔ قوم کو تقسیم کرنے والی قوتیں پاکستان کو کمزور کرنا چاہتی ہیں۔ دہشت گردی ،انتہاپسندی کے خاتمے تک اسلامی ممالک میں استحکام ممکن نہیں۔ بیت المقدس میں نماز ادائیگی پر پابندی عالمی امن کو تباہ کرنے کی سازش ہے۔ الاقصیٰ کی آزادی کیلئے مسلم امہ سب کچھ قربان کرنے کو تیار ہے۔ مسلم ممالک کو الاقصیٰ کی آزادی ،حرمین شریفین کی سلامتی و استحکام کیلئے اپنے اختلافات کو ختم کرنا ہوگا۔ پاکستان علماء کونسل اگست میں دہشت گردی ، انتہاپسندی کیخلاف اور نظریہ پاکستان کو اجاگر کرنے کیلئے ملک گیر مہم چلائے گی اور مختلف اضلاع میں ’’تحفظ نظریہ پاکستان ‘‘کے عنوان سے کانفرنسیں ، سیمینار ، تقریبات منعقد کرے گی۔ یہ بات پاکستان علماء کونسل کے زیر اہتمام علماء کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہی۔ اجلاس کی صدارت پاکستان علماء کونسل کے مرکزی چیئرمین وممبر اسلامی نظریاتی کونسل صاحبزادہ زاہد محمود قاسمی نے کی ۔ اجلاس سے مرکزی سرپرست مولانا رفیق جامی،وائس چیئرمین پیر جی خالد محمود قاسمی،مولانا عبید الرحمن ضیاء،حافظ محمد شعبان صدیقی،سیکرٹری جنرل مولانا شاہنواز فاروقی،علامہ شبیر احمد عثمانی،شیخ الحدیث مولانا حق نواز خالد،صدر پنجاب حافظ محمد امجد،اسلام آباد کے صدر مولانا ذو الفقار احمد ، مولانا عبد المنان عثمانی،مولانا عمر قاسمی،علامہ حفیظ الرحمن کشمیری،مولانا محمد مشتاق لاہوری ، مولانا گلزار احمد آزاد،مولانا عبید اللہ حیدری،مولانا عاطف محمود عباسی ودیگر علماء نے بھی خطاب کیا۔ چیئرمین پاکستان علماء کونسل صاحبزادہ زاہد محمود قاسمی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کو شام،عراق،لیبیاء بنانے کی سازشیں ہورہیں ۔ علماء اور منبر ومحراب پر بھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ اسلام کے حقیقی پیغام کو عوام تک پہنچانے کیلئے اپناکرداراداکریں۔اسلام کے نام پر فتنہ وگمراہی پھیلانے والوں کا اسلام اور پاکستان سے کوئی تعلق نہیں۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی ،انتہاپسندی کے ذریعے ملک کو کمزور کرنے والی قوتوں کا متحد ہوکر مقابلہ کرنا ہوگا۔مسجد اقصیٰ اور مظلوم فلسطینیوں پر اسرائیل کے مظالم ناقابل برداشت ہیں۔بیت المقدس کے تحفظ اور آزادی کیلئے مسلمان اپنی جان قربان کرنا سعادت سمجھتا ہے۔ مرکزی سرپرست مولانا رفیق جامی نے کہا کہ دہشت گرد تنظیموں کا ہدف اسلامی ممالک ہیں ۔ شام ،عراق،لیبیاء کے ان قوتوں کا اگلاہدف پاکستان اورسعودی عرب ہیں۔بیت المقدس کی آزادی اور مسلم ممالک کی سلامتی واستحکام کیلئے عالم اسلام کو متحد ہونا ہوگا۔ وائس چیئرمین مولانا عبید الرحمن ،پیر جی خالد محمود قاسمی نے کہا کہ اسلام امن و سلامتی کا درس دیتا ہے۔ علماء اسلام نے بے گناہ انسانیت کا خون بہانے والوں کی ہمیشہ حوصلہ شکنی ہے۔ دہشت گردی ، انتہاپسندی اور فرقہ وارانہ تشدد پھیلانے کی اسلام اور آئین پاکستان ہر گز اجازت نہیں دیتا۔ پاکستان علماء کونسل کے مرکزی سیکرٹری جنرل مولانا شاہ نواز فاروقی نے کہا کہ علماء،خطباء،آئمہ اسلام کے پیغام اعتدال کوعام کرنے کیلئے اپنا کردار اداکریں۔ دہشت گردی کے خاتمے کیلئے پاکستانی قوم اورافواج کی قربانیاں قابل فخر ہیں۔ پاکستان علماء کونسل ماہ اگست کو ماہ پاکستان کے طور پر منائے گی اور دہشت گردی ،انتہاپسندی کیخلاف بھر پور مہم چلائے گی اور ملک بھر میں’’ تحفظ نظریہ پاکستان ‘‘کے عنوان سے کانفرنسیں منعقد کرے گی۔ اجلاس میں مسجد اقصیٰ پر اسرائیلی فوج کی طرف سے مسجد اقصیٰ فائرنگ کی شدید مذمت کرتے ہوئے مطالبہ کیا گیا کہ او،آئی،سی کا فوری طور پر اجلاس بلایا جائے اور مسجد اقصیٰ کو صہیونیوں کے قبضہ سے واگزار کروانے کیلئے عملی اقدامات اٹھائے جائیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...