نواز شریف اور انکے درباریوں کے دن گنے جاچکے، قوم مزید برداشت کرنے کو تیار نہیں: سراج الحق

نواز شریف اور انکے درباریوں کے دن گنے جاچکے، قوم مزید برداشت کرنے کو تیار ...

دیربالا/کمراٹ (خصوصی رپورٹ)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ سرسبزوشاداب جنگلات کی حفاظت کرناہرشہری کااولین فرض ہے،سرسبز جنگلات ہی کسی خطے کی خوبصورتی اور ترقی کی علامت سمجھے جاتے ہیں وفاقی اورصوبائی حکومت نے کمراٹ پر توجہ دی تو یہ خطہ دنیا کادوسراسوئٹزرلینڈبن جاجائیگا،نواز شریف اور انکے درباریوں کے دن گنے جاچکے ہیں اپنے بورئے بستر گول کردیں قوم انکو مزید برداشت کرنے کو تیار نہیں،ان خیالات کااظہار انہوں نے کمراٹ پکنک دورے کے موقع پر کمراٹ پارک میں سیروتفریح کیلئے آئے سیاحوں اور مقامی عمائدین کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع انکے ہمراہ سینئرصوبائی وزیر بلدیات عنایت اللہ خان،صوبائی وزیر خزانہ مظفر سید،ممبرقومی اسمبلی صاحبزادہ طارق اللہ ،ضلعی ناظم دیربالاصاحبزادہ فصیح اللہ ،ضلعی امیرحنیف اللہ ایدوکیٹ بھی موجود تھے ،اس موقع پر صوبائی وزراء نے امیر جماعت اسلامی سینیٹرسراج الحق کو کمراٹ میں جاری ترقیاتی منصوبوں اورآئندہ کے میگاپراجیکٹ کے حوالے سے بریفنگ دی جبکہ صوبائی وزیرخزانہ نے کمراٹ پارک کیلئے دس کروڑ روپے کا اعلان کیا ،امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ قدرت نے پاکستان اور باالخصوص خیبر پختونخواکو ایسے سرسبز وشاداب پہاڑی خطے دئے ہیں جن کے سامنے سوئٹزرلینڈ جیسے ملکوں کی کوئی حیثیت نہیں لیکن ہمارے کرپٹ حکمرانوں کی توجہ اپنی تجوریوں کوبھرنے پرمرکوزرہنےٍ کی وجہ سے یہ جنت نظیر ملک دنیا کے پسماندہ ممالک سے بھی پیچھے ہے،انہوں نے کہاکہ ہمارے حکمرانوں نے عوامی فلاح و بہبود پر توجہ دینے کی بجائے اپنے خاندانوں کی فلاح و بہبود پر توجہ دی اور قومی خزانے کو لوٹ کر بیرونی ممالک میں پراپرٹیاں ،محلات اور آف شور کمپنیاں بنائیں یہی وجہ ہے کہ آج انکے محلات میں انکے کتوں اور پالتوجانوروں کیلئے تفریحی پارک اور ہر قسم کی سہولیات توموجود ہیں لیکن ہمارے عوام کیلئے پارک اور تفریح تو دور کی بات دو وقت کی روٹی بھی میسر نہیں انہوں نے کہا کہ نواز شریف اور انکے درباریوں کاوقت اب ختم ہوا چاہتا ہے انکے درباری اپنے بورئے بستر گول کردیں اب قوم مزید انکو برداشت کرنے کیلئے تیار نہیں ،انہوں نے کہا کہ نواز شریف اور انکے درباری چاہے جتنی بھی دل کو طفل تسلیاں دیں لیکن ہم دیکھ رہے ہیں کہ اب انکے جانے کا وقت اگیا ہے۔انہوں نے کہاکہ یہاں کوئی بھی اپنی مرضی سے نہیں جاتا افسوس ہے کہ ہمارے حکمرانوں نے دنیا کے حکمرانوں سے سبق نہیں لی جنہوں نے الزامات کے فوری بعد نہ صرف اپنی قوموں سے معافیاں مانگیں بلکہ انکے خلاف کیسز شروع ہونے سے پہلے انہوں نے استغفے دئے لیکن افسوس صد افسوس کہ ھمارے حکمران اپنے قوم کو کسی قوم کادرجہ تک نہیں دیتے انہیں اپنی عزت کی تو پرواہ نہیں لیکن ملک و قوم کے وقار کو دنیا بھر میں مجروح کرنا ملک دشمنی کے مترادف ہے،حکمرانوں کی عزت اسی میں تھی کہ وزیر اعظم مستغفی ہوجاتے اور اپنی پارٹی کے کسی بھی دوسرے شخص کو کیس حل ہونے تک وزیر اعظم مقرر کرتے لیکن یہ عزت انکے نصیب میں نہیں تھی انہوں نے کہا کہ اب ملک و قوم کی عزت کو خاک میں ملانے والے خائنوں کے پہلے سے بھی برے انجام کے دن قریب آچکے ہیں۔

مزید : صفحہ آخر


loading...