ڈیرہ غازی خان میں پنچائت نے 9سال کی بچی کو ’ونی ‘کر دیا

ڈیرہ غازی خان میں پنچائت نے 9سال کی بچی کو ’ونی ‘کر دیا
ڈیرہ غازی خان میں پنچائت نے 9سال کی بچی کو ’ونی ‘کر دیا

  


ڈیرہ غازی خان(ڈیلی پاکستان آن لائن)ڈیرہ غازی خان میں پنچائت نے 9سال کی بچی کو ’ونی ‘کر دیا،بچی کو اس فرسودہ رسم کا شکار بچی کے چچا پر بڈھا خان نامی فرد کی بیوی اور تین بچوں کے اغواکے الزام کے بعد کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق ڈیرہ غازی خان کے تھانہ کوٹ مبارک کے علاقے میں جاجی محمد نامی شخص نے روان ماہ کی 6تاریخ کو ایک سالہ سانول ،تین سالہ سلمی بی بی ،نو سالہ اقرابی بی کو ان کی والدہ سمیت اغواکر لیا تھا،جبکہ ان کے والد بڈھا خان نے مقامی پنچائت میں کی تھی۔

ایسے قوانین کا کوئی فائدہ نہیں جن سے ٹیکس گزاروں کو مشکلات درپیش ہوں اور حکومت کو مطلوبہ ریونیو بھی حاصل نہ ہو:چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ

پنچائت نے اغواشدگان افراد کو بازیاب کروا کے بچوں کو باپ کے حوالے کر دیا جبکہ اس کی بیوی کو اس کے باپ کے گھر بھیج دیا۔اور پنچائت نے فیصلہ کرتے ہوئے ’ونی‘کی رسم کے تحت جاجی محمد کی بھتیجی کی شادی بڈھا خان سے کر دی۔پنچائت کی کاروائی میں اور بچی کی شادی میں کئی لوگوں نے شرکت کی تھی۔

پولیس نے کاروائی کرتے ہوئے چار لوگوں سمیت کئی دوسرے لوگوں کو حراست میں لے لیا جو اس پوری فرسودہ رسم کے شراکت دار تھے ،جبکہ پنچائت کا سربراہ اور کلرک جس نے نکاح رجسٹر کیا وہ فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔

مزید : ڈیرہ غازی خان


loading...