ایچی سن کالج کی مبینہ امتیازی داخلہ پالیسی لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج ،نوٹس جاری

ایچی سن کالج کی مبینہ امتیازی داخلہ پالیسی لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج ،نوٹس ...
ایچی سن کالج کی مبینہ امتیازی داخلہ پالیسی لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج ،نوٹس جاری

  


لاہور(نامہ نگارخصوصی)ایچی سن کالج کی مبینہ امتیازی داخلہ پالیسی کو لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کر دیا گیاہے، اس سلسلے میں عدالت نے ابرہیم نامی طالب علم کی درخواست پر حکومت اور پرنسپل ایچی سن کالج کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیاہے۔

شہرقائد میں موٹرسائیکل سواردہشتگردوں کی پولیس پر فائرنگ ،ہیڈ کانسٹیبل شہید ،اہلکارزخمی

درخواست میں کہا گیا ہے کہ ایچی سن کالج کی داخلہ پالیسی کے مطابق سات سال تک کے بچے تحریری امتحان اور انٹرویو کی بنیاد پر ابتدائی کلاس می،ں داخلے کے اہل ہیں۔وکیل نے بتایا کہ درخواست گزار ابراہیم نامی ساڑھے 6 سالہ بچے کو تحریری امتحان اور انٹرویو میں پاس ہونے کے باوجود صوبہ سندھ سے تعلق ہونے کی بنا  پر داخلہ نہیں دیا جا رہا۔انہوں نے کہا کہ آئین پاکستان کے تحت ہر شہری کو برابری کے حقوق حاصل ہیں، رنگ، نسل اور قومیت کی بنیاد پر کسی سے امتیازی سلوک نہیں برتا جا سکتا۔انہوں نے عدالت سے استدعا کی میرٹ پر پورا اترنے کے باوجود طالب علم کو داخلہ نہ دینے پر ایچی سن کالج انتظامیہ سے جواب طلب کیا جائے جبکہ ایچی سن کالج کی امتیازی داخلہ پالیسی کو کالعدم قرار دیا جائے جس پر عدالت نے نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیاہے۔

مزید : لاہور


loading...