زرعی ٹیکنالوجی کا فروغ‘یو ایس ایڈ،پاٹا کے زیر اہتمام مشاورتی اجلاس

زرعی ٹیکنالوجی کا فروغ‘یو ایس ایڈ،پاٹا کے زیر اہتمام مشاورتی اجلاس

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(پ ر)یو ایس ایڈ، پاکستان ایگریکلچرل ٹیکنالوجی ٹرانسفر ایکٹیویٹی (PATTA)کے زیر اہتمام پنجاب میں کسانوں کی جانب سے زرعی ٹیکنالوجی کے استعمال کو فروغ دینے کے لیے مشاورتی اجلاس کا انعقاد کیا گیا۔ یو ایس ایڈ، پاٹا نے جدید زرعی طریقہ کار، فروخت میں اضافہ اور کسانوں کی جانب سے زرعی ٹیکنالوجی کے استعمال پر ان کی رہنمائی کرنے اور آگاہی کو فروغ دینے کے لیے نجی شعبے کو تکنیکی مدد فراہم کی۔ اجلاس میں اس بات کا اظہار کیا گیا کہ پراجیکٹ کے شراکت دار جس قدر اپنی پہنچ بڑھائیں گے کسانوں کو اس قدر فائدہ ہو گا، کسان جدید آلات اور طریقہ کار کو اپنا کر کم خرچ میں زیادہ منافع کما سکیں گے۔  PATTAاپنے شراکت داروں کے ذریعے زرعی مصنوعات اور خدمات کو فروغ دینا چاہتا ہے جس سے کسانوں کی آمدن میں اضافہ ہو گا اور ان کی سستی اور جدید ٹیکنالوجیز تک آسان رسائی ممکن ہو گی۔  PATTAکے اس پراجیکٹ کا مقصد پرائیویٹ شعبے کی مدد کرنا ہے کہ وہ ان رویوں کو سمجھ سکیں جو عام طور پر زراعت میں جدید ٹیکنالوجی کے استعمال کی حوصلہ شکنی کرتے ہیں۔ حسین عطا، بزنس ڈیویلپمنٹ منیجر، فارم ڈائنامکس پاکستان (FDP)نے اس اجلاس میں شرکت کی -
اور زرعی ٹیکنالوجی کے فروغ کے لیے یو ایس ایڈ کے عزم کی تعریف کی۔ انھوں نے مزید کہا کہ پاٹا کی زرعی ٹیکنالوجی کے فروغ کے لیے کی جانے والی کوششیں قابل تحسین ہیں جس سے زیادہ سے زیادہ کسانوں تک رسائی ممکن ہو پائے گی۔ ہم مارکیٹنگ کے بہتر استعمال اور رویوں میں تبدیلی لا کر زرعی ٹیکنالوجی کو مزید کئی علاقوں تک فروغ دے سکتے ہیں۔ 
جنوری 2019سے اب تک PATTAنے نجی شعبے کے شراکت داروں کے تعاون سے زرعی ٹیکنالوجی کے فروغ کے لیے موئثر اور کم لاگت طریقہ کار کا استعمال کیا ہے۔ خاص طور پر PATTAنے پہلی بار معاشرتی رویوں میں تبدیلی کے طریقہ کار کو اپناتے ہوئے FDPکی بہتر فوڈر سیڈ کے حوالے سے مدد کی ہے۔ اس مہم میں سوشل میڈیا کے علاوہ انفرادی سطح پر بھی کسانوں تک پیغام پہنچانے کی کوشش کی گئی ہے۔  ان کوششوں کے سبب FDPنے پنجاب میں نئے اضلاع تک بھی رسائی حاصل کی اور 900سے زائد کسانوں، ڈیلرز اور دیگر افراد نے اس سے استعفادہ حاصل کیا۔ 
 PATTAکے پارٹی چیف Jean Francois Guayنے اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ جدید طریقے سے رویوں میں تبدیلی لا کر یو ایس ایڈ، PATTAکمیونٹی کی سطح پر اور ڈیجیٹل میڈیا پر مہم چلانے کے لیے اپنے شراکت داروں کے ساتھ مل کر کام کر رہا ہے۔  اس مہم سے کسان فائدہ اٹھائیں گے اور زرعی ٹیکنالوجی کے استعمال میں حائل رکاوٹیں دور ہوں گی۔  
USAID PATTA's SBCCورکنگ گروپ ایگریکلچرل ٹیکنالوجی کمپنیز کے لیے ایک متحرک پلیٹ فارم ہے جونجی شعبے کو اس قابل بناتا ہے کہ وہ اپنی زرعی ٹیکنالوجی کی فروخت کو فروغ دے سکیں جو آخر کار کسانوں کے لیے سود مند ثابت ہو گا۔  2021تک PATTAبہتر آگاہی کے ذریعے زرعی ٹیکنالوجی کے استعمال سے 122,500چھوٹے کسانوں کو فائدہ پہنچائے گا۔ 

مزید :

کامرس -