ہواوے نے تجارتی پابندیوں کے باعث امریکا میں اپنے ریسرچ مراکز کے دوتہائی ملازمین کو فارغ کردیا

  ہواوے نے تجارتی پابندیوں کے باعث امریکا میں اپنے ریسرچ مراکز کے دوتہائی ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


واشنگٹن(  آن لائن)چین کی ٹیلی کمیونیکیشن کمپنی ہواوے نے اپنے اوپر عائد تجارتی پابندیوں کے باعث امریکا میں اپنے فیوچر وے ٹیکنالوجی ریسرچ  مراکز کے دوتہائی ملازمین کو فارغ کردیا۔سلیکان ویلی، گریٹر سیٹل، شکاگو اور ڈیلاس میں ہواوے کے ٹیکنالوجی کے حوالے سے تحقیقی مراکز ہیں جہاں 850 ملازمین کام کررہے تھے جن میں سے 600 کو فارغ کیا گیا ہے۔ہواوے کا کہنا ہے کہ ملازمین کی تعداد میں کمی کا فیصلہ فوری طور پر نافذ العمل ہے، یہ فیصلہ امریکی پابندیوں کے باعث کاروباری سرگرمیوں میں کمی کی وجہ سے کیا گیا ہے۔ گزشتہ سال ان مراکز پر ہونے والے آپریشنل اخراجات کا حجم 510 ملین ڈالر رہا تھا۔ یاد رہے کہ چینی ٹیلی کام کمپنی ہواوے دنیا کی سب سے بڑی ٹیلی کمیونیکیشن آلات بنانے والی کمپنی ہے جسے امریکی محکمہ تجارت نے مئی میں سیکورٹی رسک قرار دے کر ملکی کمپنیوں پر اسے ٹیکنالوجی مصنوعات کی فراہمی پر پابندی عائد کردی تھی۔

مزید :

کامرس -