آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس،حمزہ شہباز کی فنانشل سٹیٹمنٹس عدالت میں پیش،لیگی رہنما کے ریمانڈ میں مزید10 روز کی توسیع

آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس،حمزہ شہباز کی فنانشل سٹیٹمنٹس عدالت میں پیش،لیگی ...
آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس،حمزہ شہباز کی فنانشل سٹیٹمنٹس عدالت میں پیش،لیگی رہنما کے ریمانڈ میں مزید10 روز کی توسیع

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)احتساب عدالت میں آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں نیب نے حمزہ شہباز کی فنانشل سٹیٹمنٹس پیش کردیں۔تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت میں مسلم لیگ ن کے رہنما اور قائد حزب اختلاف حمزہ شہباز کیخلاف آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس کی سماعت ہوئی، اس موقع پر سکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے ،نیب نے حمزہ شہباز کی فنانشل سٹیٹمنٹس پیش کردیں،تفتیشی افسر نے عدالت کو بتایا کہ ملزم کے اکاؤنٹس اورآمدن کا30جون 2006 سے2007تک موازنہ کیا ہے،ملزم کے فنانشل سٹیٹمنٹس کواس کے بینک اکاو¿نٹس کےساتھ موازنہ کیاہے،دوران تفتیش 2 بے نامی کمپنیاں سامنے آئی ہیں،دونوں کمپنیاں حمزہ شہبازکی بے نامی کمپنیاں ہیں،دونوں کمپنیوں میں 5ارب روپے منتقل ہوئے،پراسیکیوٹر نیب نے کہا کہ 16 ملین کی ماڈل ٹاوؐن کی جائیداد بیرون ملک سے بھجوائی گئی رقم سے خریدنے کاانکشاف ہوا، پراسیکیوٹر نیب نے کہا کہ حمزہ شہبازکے ملازمین نثاراحمد،علی احمدخان،ندیم سعیداورمحمد طاہر کے نام پر کمپنیاں ہیں، نثاراحمدوزیراعلیٰ ہاو¿س میں کانٹریکٹ پرملازم بھی رہا ہے،ملزم کے2005کے دوران 20ملین سے45ملین تک اثاثوں میں اضافے پرتفتیش کرنی ہے،عدالت سے استدعا ہے کہ حمزہ شہباز کے جسمانی ریمانڈ میںمزید15دن کی توسیع کی جائے،حمزہ شہباز کے وکیل نے کہا کہ حمزہ شہباز تمام رکارڈنیب کے حوالے کرچکے ہیں،حمزہ شہبازکے مزیدجسمانی ریمانڈ کی ضرورت نہیں ہے،عدالت نے حمزہ شہباز کے جسمانی ریمانڈمیں 10روز کی توسیع کر دی۔