شاہ محمود سمیت جنوبی پنجاب کے ایم این ایز کا میپکو کی کارکردگی پر اظہار عدم اعتماد

      شاہ محمود سمیت جنوبی پنجاب کے ایم این ایز کا میپکو کی کارکردگی پر اظہار ...

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور جنوبی پنجاب سے تعلق رکھنے والے ممبران قومی اسمبلی نے بھی میپکو کی کارکردگی پر عدم اعتماد کا اظہارکرتے کہا ہے میپکو کو اپنی کارکردگی کو عوام کی امنگوں کے مطابق بہتر بنانا ہو گا،کام نہ کرنیوالے افسران کو کسی صورت برداشت نہیں کریں گے جبکہ وفاقی وزیر توانائی عمر ایوب نے کہاہے کہ وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی اور جنوبی پنجاب کے ممبران پارلیمنٹ کے تحفظا ت حقایق پر مبنی ہیں، انہیں دور کرنے اور میپکو کی کارکردگی کو بہتر بنانے کیلئے ہر ممکن اقدام کریں گے۔ جمعرات کو وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قر یشی کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہاؤس میں میپکو کی کارکردگی کے حوالے سے اہم اجلاس ہوا جس میں وفاقی وزیر توانائی عمر ایوب، وفاقی و ز یر برائے فوڈ سکیورٹی سید فخر امام، چیف وہپ قومی اسمبلی سردار عامر ڈوگر اور جنوبی پنجاب سے تعلق رکھنے والے متعدد ممبران قومی اسمبلی نے شر کت کی۔ شاہ محمود قریشی نے کہاکہ گذشتہ دو سال میں میپکو کی کارکردگی انتہائی مایوس کن رہی،جنوبی پنجاب کے لوگوں کے میپکو کیخلاف تحفظا ت روز بروز بڑھتے جا رہے ہیں۔ سید فخر امام نے کہا میپکو کی کارکردگی کو ڈیجیٹلائز کر کے ہفتہ وار کارکردگی سامنے لا ئی جائے۔

میپکو عدم اعتماد

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ بھارت ایل او سی پر شہری آبادیوں کو نشانہ بنا رہا ہے، انڈیا کی طرف سے ہمیشہ دہرا معیار سامنے آیا۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا عالمی میڈیا کے ایل او سی کے دورے کے حوالے سے اپنے بیان میں کہنا تھا غیر ملکی میڈیا کے نمائندوں کا ایل او سی دورہ بہت اہم تھا، بھارت کی طرف سے ہمیشہ دہرا معیار سامنے آیا، بھارت عالمی قوانین کی خلاف ورزیاں کر رہا ہے کہ سچ چھپا رہے۔شاہ محمود قریشی نے بنگلادیش کے تعلقات کے حوالے سے کہا بنگلادیش کیساتھ اچھے تعلقات کے خواہاں ہیں، بنگلادیش کیساتھ ماضی کی تلخیاں بھلا کر اچھا مستقبل چاہتے ہیں، ہم نے بنگلادیش میں نئے سفیر کی تعیناتی بھی کر دی۔قبل ازیں انکی زیر صدات پارلیمانی کمیٹی برائے قانونی سازی کے اجلاس میں طے پایا کہ آج قومی اسمبلی سیکرٹریٹ کے ذریعے نیب کا مجوزہ ڈرافٹ اور ایف اے ٹی ایف قانون کے مسودہ جات اراکین اپوزیشن کو پیش کر دیئے جائیں گے،اس موقع پر شاہ محمود قریشی نے کہا کمیٹی کے پہلے اجلاس میں خوشگوار ماحول میں گفتگو ہوئی،ہم نے اپوزیشن کیساتھ مل بیٹھ کر مختلف قانونی امور پر تبادلہ خیال کرنے اور ان کا نکتہ نظر جان کر آگے بڑھنے کا فیصلہ کیا ہے،کچھ ایف اے ٹی ایف سے متعلقہ بلز ہیں جو زیر بحث آئیں گے،پاکستان مخالفین بالخصوص ہندوستان پاکستان کو بلیک لسٹ میں دھکیلنا چاہتا ہے،مگر ہم مل کر پاکستان کو فیٹف کی گرے لسٹ سے نکالیں گے۔پارلیمانی کمیٹی قانون سازی کے اجلاس میں وفاقی وزراء پرویز خٹک، اسد عمر، شفقت محمود، سینیٹر شبلی فراز، شیریں مزاری،وزیرمملکت علی محمد خان، مشیرڈاکٹر ظہیر الدین،بابر اعوان، مرزا شہزاد اکبر جبکہ اپوزیشن کی جانب سے سردار ایاز صادق، خواجہ سعد رفیق، احسن اقبال، راجہ پرویز اشرف، سید نوید قمر، سینیٹر زشیری رحمن، فاروق نائیک و دیگر شریک ہوئے۔شاہ محمود کا کہنا تھا وہ اہم قوانین جن پر ہم نے تبادلہ خیال کرنا ہے ان میں ایک نیب کا قانون ہے جس پر ہمارا ایک نکتہ نظر جبکہ اپوزیشن کا اپنا نکتہء نظر ہے،اس کے علاوہ کچھ ایف اے ٹی ایف سے متعلقہ بلز ہیں جو زیر بحث آئیں گے۔دونو ں قانو نی مسودے اپوزیشن تسلی سے پڑھ لے اور پھر پیر کوپارلیمانی کمیٹی کا دوسرا اجلاس ہو گا جس میں ہم اس ایجنڈے کو آگے لیکر چلیں گے۔

شاہ محمود قریشی

مزید :

صفحہ اول -