کورونا فری علاقوں میں سکول اور کاروبار کی اجازت دی جائے،اختیار ولی

کورونا فری علاقوں میں سکول اور کاروبار کی اجازت دی جائے،اختیار ولی

  

پشاور(سٹی رپورٹر)پاکستان مسلم لیگ ن خیبرپختونخوا کے ترجمان اختیار ولی خان نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ کورونا فری علاقوں میں کاروباری سرگرمیاں سمیت سکول اور ہسپتال کھول دیے جائے اپنے ایک ایک بیان میں انہوں نے کہ کرو نہ کی وجہ سے پاکستان کی معیشت اور کاروبار دونوں برباد ہو چکے ہیں کاروباری اور صنعتی سرگرمیوں کے بند ہو جانے کی وجہ سے کروڑوں لوگ بھوک کا شکار ہو چکے ہیں۔ حکومتی اعداد و شمار کے مطابق دن بدن کرونا کم ہوتا جا رہا ہے اور کئی ایسے اضلاع ہیں جہاں پہ کرونا کیس بالکل منفی ہو چکے ہیں اور ہسپتال کرونا فری ڈکلیئر کیے جا چکے ہیں۔ ایسے حالات میں جمود سے نکل کر ایک متحرک زندگی کی طرف بڑھنے کے لئے ایک مثبت قدم اٹھانے کا وقت آگیا ہے۔ حکومت جس سمارٹ لاک ڈاؤن کا کریڈٹ لیتی رہی ہے اب حکومت کو سمارٹ لاک ڈاؤن سے سمارٹ اوپننگ کی طرف کا سفر شروع کرنا چاہیے۔ ایس او پیز کے تحت اب جہاں کرونا کیسز منفی ہے وہ اسکول اور کالج کو لے جائیں کرو نا فری علاقوں میں شادی ہال کھولنے کی بھی اجازت دی جائے اور جن علاقوں میں کرو نہ ختم ہو چکا ہے اور وہاں کے ہسپتال کے رونا فری ہو چکے ہیں ایسے ضلع تحصیل اور بازاروں کی ہفتہ اتوار کی جبری چھٹی بھی ختم کی جائے۔۔ حکمران جان بوجھ کر کرونا کو لمبا کر کے اس کے پیچھے چھپے ہوئے ہیں اور اپنی حکومت کو لمبا کھینچنا چاہتے ہیں لیکن یہ کھیل دیا تھا عرصہ نہیں چلے گا اب ان کو باہر نکلنا ہوگا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -