کورونا میں مبتلا والدہ سے والہانہ محبت کا اظہار، نوجوان ہسپتال کی عمارت پر چڑھ کر والدہ کے کمرے کی کھڑکی پر بیٹھ گیا

کورونا میں مبتلا والدہ سے والہانہ محبت کا اظہار، نوجوان ہسپتال کی عمارت پر ...
کورونا میں مبتلا والدہ سے والہانہ محبت کا اظہار، نوجوان ہسپتال کی عمارت پر چڑھ کر والدہ کے کمرے کی کھڑکی پر بیٹھ گیا

  

غزہ (ویب ڈیسک) کورونا وائرس میں مبتلا والدہ سے والہانہ محبت کا اظہار کرتے ہوئے فلسطینی نوجوان ہسپتال کی عمارت پر چڑھ کر والدہ کے کمرے کی کھڑکی پر بیٹھ گیا۔ 30 سالہ جہاد السویتی نامی فلسطینی نوجوان کو بذات خود رسما سلیما نامی اپنی والدہ سے ملنے کی اجازت نہیں دی گئی تھی کیونکہ ان میں کورونا وائرس کا ٹیسٹ مثبت آیا تھا اور انہیں مغربی کنارے میں ہیبرون میں ہسپتال میں داخل کیا گیا تھا۔ ملنے کی پابندی کے باوجود جہاد نے ہسپتال کی عمارت پر چڑھنے کیلئے پانی کی نالیوں اور کھڑکی کے چھجے کا استعمال کیا تاکہ وہ والدہ کی کھڑکی کی سیفٹی کے پیچھے ان کے ساتھ بیٹھ سکے۔ ان کی والدہ کو خون کا سرطان بھی تھا۔

وہ اپنی والدہ کے افسوسناک انتقال تک ہر روز واپس آیا کرتا تھا۔ ہسپتال کے ایک عہدیدار نے مقامی میڈیا کو بتایا کہ وہ اپنا بیشتر دن وہاں کھڑکی کے باہر سے اپنی والدہ کی حالت دیکھتے ہوئے گزارا کرتا تھا اور نیچے آنے سے پہلے وہ تسلی کرلیا کرتا تھا کہ اس کی والدہ سوگئی ہیں۔ اطلاعات کے مطابق جہاد اس خاتون کا سب سے چھوٹا بیٹا تھا اور اس کے والد کا 15 سال پہلے انتقال ہوگیا تھا۔

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -