چین اور امریکہ کے درمیان کشیدگی بڑھ گئی، چین نے بھی امریکی قونصل خانہ بند کروادیا، پریشان کن خبر آگئی

چین اور امریکہ کے درمیان کشیدگی بڑھ گئی، چین نے بھی امریکی قونصل خانہ بند ...
چین اور امریکہ کے درمیان کشیدگی بڑھ گئی، چین نے بھی امریکی قونصل خانہ بند کروادیا، پریشان کن خبر آگئی

  

بیجنگ (مانیٹرنگ ڈیسک) چند روز قبل امریکی صدر ڈونلڈٹرمپ نے چین کو امریکی شہر ہوسٹن میں واقع اپنا قونصل خانہ بند کرنے کا حکم دیا تھا اور اب جیسے کو تیسا کے مصداق چینی حکومت نے بھی امریکہ کو اپنے شہر شینگ ڈو میں واقع قونصل خانہ بند کرنے کا حکم دے دیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق امریکی حکومت کی طرف سے الزام عائد کیا گیا تھا کہ چینی فوج ہوسٹن میں واقع چینی قونصل خانے کے ذریعے جاسوسی کر رہی ہے۔ وہ اس قونصل خانے کے ذریعے اپنے ایجنسٹس اور چینی طالب علموں کو امریکی ویزے دلواتی ہے جو ٹیکساس کے تعلیمی و تحقیقاتی اداروں کی میڈیکل اور دیگر ریسرچز چرا کر امریکہ پہنچاتے ہیں۔ ان چوری شدہ ریسرچ کی بدولت چینی فوج اپنی جنگی صلاحیتوں میں اضافہ کرتی اور اپنے ہتھیاروں کو جدید تر بناتی ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق امریکی حکومت کی طرف سے قونصل خانے کی عمارت خالی کرنے کا حکم ملنے پر چینی سفارتی عملے نے عمارت کے بیک یارڈ میں کاغذات اور دستاویزات جلا ڈالیں۔

واشنگٹن میں واقع چینی سفارتخانے کی طرف سے ٹرمپ انتظامیہ سے درخواست کی گئی تھی کہ وہ اپنے اس فیصلے پر نظرثانی کرے لیکن اب اس امریکی اقدام کے جواب میں چین نے شینگ ڈو میں واقع امریکی قونصل خانے کے سفیروں پر الزام عائد کر دیا ہے کہ وہ ایسی سرگرمیوں میں ملوث رہتے ہیں جو ان کے سٹیٹس سے ہم آہنگ نہیں۔ چینی حکومت کی طرف سے حکم دیا گیا ہے کہ شینگ ڈو قونصل خانے کا عملہ 72گھنٹے میں عمارت خالی کر دے۔واضح رہے کہ امریکہ نے بھی چینی سفارت کاروں کو 72گھنٹے میں ہی قونصل خانے کی عمارت خالی کرنے کا حکم دیا تھا۔ بین الاقوامی ماہرین کا کہنا ہے کہ امریکہ اور چین کے تعلقات میں تلخی اس وقت اپنے عروج کو پہنچ چکی ہے اور ایسے اقدامات سے اس میں مزید اضافہ ہو رہا ہے جو دونوں عالمی طاقتوں کے درمیان تصادم کا سبب بن سکتا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -