صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی سندھ میں اِن ایکشن ،  گورنرہاؤس میں منعقدہ اعلیٰ سطح اجلاس میں اہم فیصلے

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی سندھ میں اِن ایکشن ،  گورنرہاؤس میں منعقدہ اعلیٰ ...
صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی سندھ میں اِن ایکشن ،  گورنرہاؤس میں منعقدہ اعلیٰ سطح اجلاس میں اہم فیصلے

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن)صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کی زیر صدارت گورنرہاؤس میں اعلیٰ سطح اجلاس منعقد ہوا ،اس موقع پر گورنرسندھ عمران اسماعیل اور وفاقی وزیربرائے منصوبہ بندی و ترقی اور خصوصی اقدامات اسد عمر بھی موجود تھے ۔اجلاس میں رکن قومی اسمبلی جے پرکاش ، رکن سندھ اسمبلی فردوس شمیم نقوی ، سعید آفریدی ، خرم شیر زمان ، بلال غفار اور سندھ اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر حلیم عادل شیخ بھی شریک تھے ۔

وفاقی وزیر اسد عمر نے کورونا وائرس کی صورتحال ،خصوصاً چوتھی لہر میں انڈین وائرس کی موجودگی کے حوالہ سے صدر کو تفصیلی طور پر آگاہ کیااوروفاقی فنڈنگ سے جاری ترقیاتی سکیم اور صوبہ کے لئے مستقبل کے منصوبوں سے متعلق بریفنگ بھی دی۔

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ کورونا وائرس کی روک تھام کے لئے ایس او پیز پر عملدرآمد یقینی بنایا جائے،جتنی جلد ممکن ہو سکے عوام ویکسین لگوائیں اور این سی او سی کی ہدایات پر سختی سے عملدرآمد کریں ۔ صدر مملکت نے گورنرسندھ کو ہدایت دی کہ وہ محرم الحرام سے قبل مختلف مکاتب فکر کے علماءکے ساتھ اجلاس کا انعقاد کریں تاکہ محرم الحرام کے ایام میں مذہبی مقامات اوراجتماعات میں ایس او پیز پر عملدرآمد یقینی بنایا جاسکے،اس مشکل وقت میں عوام ذمہ داری کا مظاہرہ کریں ۔

صدر مملکت نے کہا کہ فیصل مسجد اسلام آباد میں عید کی نماز کے دوران این سی او سی اور اس سے متعلق دیگر ہدایات پر لوگوں نے عملدرآمد سے گریز کیا جو کہ تشویشناک بات ہے ۔انہوں نے مزید کہا کہ موئثر حکمت عملی کے ذریعہ سے ہی غربت کا خاتمہ اور پائیدار ترقی ممکن ہے،کراچی اور صوبہ کے دیگر اضلاع کی ترقیاتی سکیموں کے حوالہ سے وفاقی حکومت کی کاوشیں قابل ستائش ہیں ۔

گورنرسندھ نےکہا کہ عوام ماسک کا استعمال کریں ، رش سے دور رہیں اور ویکسین ضرور لگوائیں، پائیدار منصوبوں اور اقدامات سے صوبہ کے ماحولیاتی ، معاشی اور سماجی مسائل کا حل یقینی بنانا ہے۔ وفاقی وزیر اسد عمر نے کہا کہ وفاقی حکومت صوبہ سندھ میں پائیدار ترقی کے ایجنڈا پر کام کررہی ہے ،دو جہتی حکمت عملی کے ذریعہ بڑے شہروں اور سیاحتی مقامات پر سختی سے ایس او پیز پر عملدرکرارہے ہیں ۔ 

مزید :

قومی -