پاک،لنکا دوسرا ٹیسٹ،قومی ٹیم میں تبدیلیوں کا امکان

پاک،لنکا دوسرا ٹیسٹ،قومی ٹیم میں تبدیلیوں کا امکان
پاک،لنکا دوسرا ٹیسٹ،قومی ٹیم میں تبدیلیوں کا امکان

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


پاکستان اور سری لنکا کے مابین کھیلی جانے والی ٹیسٹ سیریز کا دوسرا اور آخری ٹیسٹ گال میں کھیلا جا رہا ہے سیریز میں قومی ٹیم کو ایک،صفر کی نفسیاتی برتری حاصل ہو چکی ہے جس کے بعد قوم ی ٹیم آئی سی سی ٹیسٹ چیمپئن شپ میں پوائنٹس ٹیبل کے حساب سے تیسرے نمبر پر آچکی ہے جہاں اس کو اپنے پوزیشن کو مضبوط کرنے کے لئے اور ٹورنامنٹ کی ٹاپ دو ٹیموں میں شامل ہونے کے لئے اس میچ کو جیتنا بھی ضروری ہے۔ہار کی صورت میں پوائنٹس میں کمی نہیں ہو گی تاہم اس تیسری پوزیشن کو جھٹکا ضرور لگ سکتا ہے۔میچ سے قبل قومی ٹیم کو ایک دھچکا شاہین شاہ آفریدی کی صورت لگ چکا ہے جو گٹھنے میں انجری کے سبب سیریز سے باہر ہو چکے ہیں جب کے اس کے ساتھ اظہر علی اور آغا سلمان بھی اس ٹیسٹ میں باہر کئے جا سکتے ہیں۔ان تین کھلاڑیوں کی جگہ شان مسعود،فواد عالم اور نعمان علی کو کھلائے جانے کے امکانات روشن ہیں۔ یہ تبدیلیاں میچ میں وننگ پوزیشن برقرار رکھنے کے لئے ضروری ہیں۔


قومی کرکٹ ٹیم میں تبدیلیوں کی بات کی جائے تو اظہر علی جو ایک عرصہ سے صرف ٹیسٹ میچز کے لئے اپنے آپ کو مخصوص کر چکے ہیں اور یہاں بھی ان کی حالیہ پرفارمنس پر نظر دوڑائی جائے تو وہ آج کل آؤٹ آف فارم ہیں اور ان کا بلا رنز اگلنا بھول چکا ہے جس کے باعث انتظامیہ سر جوڑ کر بیٹھ چکی ہے اور اظہر علی کو آرام کی غرض سے باہر بٹھا کر انگلینڈ کی سیریز میں آزمائے جانے کا امکان ہے۔ان کی جگہ ان فارم بیٹر شان مسعود جو انگلش کاؤنٹی میں رنزوں کے ڈھیر لگا چکے ہیں اس وقت قومی ٹیم کے ساتھ سری لنکا میں موجود ہیں اور قومی سکواڈ کا حصہ ہیں ان سے استعفادہ اٹھائے جانے کا امکان ہے جبکہ فواد عالم کو پہلا ٹیسٹ کھیلنے والے سلمان علی آغا کی جگہ کھلایا جا سکتا ہے۔اس کی بنیادی وجہ سلمان علی آغا کا انٹرنیشنل لیول پر ٹیمپرامنٹ کافی لوز دکھائی دیتا ہے اور پہلے ٹیسٹ میچ میں ان میں اعتماد کی کمی دکھائی دی جسے کے بعد فواد عالم ان کی جگہ چوائس ثابت ہو سکتے ہیں۔اب بات کر لیتے ہیں نعمان علی کی تو شاہین شاہ آفریدی کے انجرڈ ہونے اور سری لنکا کی پچز سپنرز کے لئے ساز گار ہونے کے باعث انہیں یہ موقع فراہم کیا جا رہا ہے۔قومی ٹیم کو سیریز میں یقینی کامیابی کے لئے ٹیم میں تبدیلیاں کرنے کی اشد ضرورت ہے اور ویسے بھی جب کھلاڑی آؤٹ آف فارم ہو تو اس کو تبدیل کرنے میں کوئی ھرج بھی نہیں ہونا چاہئے۔


پہلے ٹیسٹ میچ کے ہیرو عبداللہ شفیق نے دنیا کے بڑے بڑے بلے بازوں کو پیچھے چھوڑتے ہوئے کرکٹ کے دیوتا سر ڈان بریڈ مین کے بعد دوسرے نمبر پر ایسے بلے باز بن گئے ہیں جن کی ایوریج پہلے چھ یا سات میچوں میں ساٹھ سے اوپر ہے سر دان بریڈ مین نے اپنے پہلے چھ ٹیسٹ میچوں کی 11اننگ میں 90کی ایوریج سے رنز سکور کرتے ہوئے 990رنز سکور کئے تھے جبکہ عبداللہ شفیق نے اپنے پہلے چھ ٹیسٹ میچز میں 67کی ایوریج سے 700سے اوپر رنز بنا چکے ہیں۔ان کی دلکش بیٹنگ اور تحمل مزاجی کو دیکھتے ہوئے دنیا کے مایہ ناز بلے باز اور عظیم کرکٹر نے انہیں قومی ٹیم کا ایک اہم ستون قرار دے دیا ہے اب دیکھنا یہ ہے کہ وہ مزید اپنی اس اہلیلت کو کس طرح ثابت کرتے ہیں۔عبداللہ شفیق کی اگر پرفارمنس پر نظر دوڑائی جائے تو بہت کم لوگوں کو اس بات کا علم ہو گا کہ عبداللہ شفیق نے فرسٹ کلا س میچز بہت کم کھیلے ہیں مگر ٹی ٹونٹی میچز میں ان کی قومی کپ میں سنچری اور سٹائل نے ہر کسی کو اپنا گرویدہ بنا لیا۔خاص طور پر اس ہیرو کو قومی سلیکٹرز نے جانچتے ہوئے ایک بہترین ٹیسٹ پلیئر بنانے میں اہم کردار ادا کیا اور اور ان پر کام کیا جس کے بعد ان کا یہ روپ سامنے آیا۔میری دعا ہے کہعبداللہ شفیق پاکستان کا قیمتی اور اہم اثاثہ ثابت ہوں اور قومی ٹیم اور ملک و قوم کے ساتھ اپنا نام روشن رکھنے میں بھی کامیاب ہوں جس طرح سے پہلے ٹیسٹ میں عمدہ بیٹنگ کا مظاہرہ کیا اور امیدوں پر پورا اترے اسی طرح سے  دوسرے ٹیسٹ میں بھی عمدہ کھیل پیش کرینگے۔
سے شروع دوسرے ٹیسٹ میچ میں بھی شائقین کرکٹ کوان سے بہت زیادہ امیدیں وابستہ ہیں۔

مزید :

رائے -کالم -