عالمی ادارہ صحت نے "منکی پاکس "کو  ہیلتھ ایمرجنسی قرار دے دیا

عالمی ادارہ صحت نے "منکی پاکس "کو  ہیلتھ ایمرجنسی قرار دے دیا
عالمی ادارہ صحت نے

  

جنیوا(ڈیلی پاکستان آن لائن )عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او )کے سربراہ "ٹیڈروس ادھانوم "کا کہنا ہے کہ منکی پاکس کا 70 سے زائد ملکوں میں پھیل جانا ایک غیر معمولی صورتحال ہے لہٰذا اب اس بیماری کو عالمی ایمرجنسی قرار دیا جانا ناگزیر ہوگیا ہے۔

 سماجی رابطے کی ویب سائیٹ ٹویٹر پر عالمی ادارہ صحت نے اپنے آفیشل اکاؤنٹ سے پیغام جاری کیا ہے کہ"ہمیں اس وقت عالمی وبا ءکا سامنا ہے جو کہ آہستہ آہستہ پوری دنیا میں پھیل رہی ہے اور اس مرض (منکی پاکس)کے ایک سے دوسرے شخص میں  منتقلی کے مختلف طریقے ہیں ،جن کے بارے میں ہم بہت تھوڑا جانتے ہیں ۔

ایک اور ٹویٹ میں عالمی ادارہ صحت کی جانب سے کہا گیا ہے کہ "ان تمام وجوہات کی بنا ءپر  فیصلہ کیا ہے کہ "منکی پاکس "وباء دنیا کیلئے ہیلتھ ایمرجنسی بن چکی ہے ۔

ڈبلیو ایچ او کی جانب سے کہا گیا ہے کہ "منکی پاکس " کا زیادہ تر شکار وہ افراد ہیں جو  مرد سے مرد تعلقات قائم کرتے اور خا ص کر وہ مرد جن کے ایک سے زیادہ مردوں کے ساتھ تعلقات ہیں ۔

ڈبلیو ایچ او کا مزید کہنا ہے کہ اس لیے "منکی پاکس " کو روکنے کیلئے ضروری ہے کہ تمام ممالک ایسی کمیونیٹیز کیساتھ  کام کریں جو مرد سے مرد تعلقات قائم کرتی ہیں اور  بہترین طریقے سے ڈیٹا حاصل کر کے ان تک مکمل معلومات پہنچائیں تا کہ اس وباء سے متعلق حفاظتی اقدامات کیے جا سکیں ۔

واضح رہے کہ بی بی سی کے مطابق امریکا میں 2 بچوں میں بھی "منکی پاکس "کے اثرات سامنے آ چکے ہیں جن میں سے ایک کا تعلق کیلیفورنیا سے ہے جبکہ دوسرا واشنگٹن سے ہے ،امریکا میں اب تک منکی پاکس وائرس کے2500 سے زائد کیسز رپورٹ ہوچکے ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -تعلیم و صحت -