سیاسی جماعتیں چینی سرمایہ کاری سے فائدے کیلئے اتحاد پیداکریں

سیاسی جماعتیں چینی سرمایہ کاری سے فائدے کیلئے اتحاد پیداکریں

لاہور(وقائع نگار) سارک چیمبر کے نائب صدر اور ایف پی سی سی آئی کے سابق صدر افتخار علی ملک نے ملک کی تمام سیاسی جماعتوں پر زور دیا ہے کہ چھیالیس ارب ڈالر کی عظیم الشان خارجہ سرمایہ کاری کو زمینی حقیقت بنانے ، کاروباری سرگرمیاں بڑھانے اور زیادہ سے زیادہ روزگار کے مواقع پیدا کرنے کے لیے ملک میں اتفاق و اتحاد کی فضا پیدا کریں۔گزشتہ روز جاری کردہ اپنے بیان میں افتخار علی ملک نے کہا ہے کہ ملک میں خارجہ سرمایہ کاری لانے کے لیے وزیراعظم پاکستان میاں نواز شریف کی کاوشوں کو کاروباری طبقہ قدر کی نگاہ سے دیکھتا اور متعلقہ منصوبوں پر عمل درآمد میں ہر ممکن تعاون کرنے میں کوئی کسر اٹھا نہیں رکھے گا۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں دہشت گردوں کے خاتمہ اور امن قائم کرنے کے لیے پاک فوج کا آپریشن ضرب عضب ملک کی بے مثال خدمت ہے۔ اس لیے کہ بعض ہمسایہ ممالک دہشت گردی کے واقعات کی آڑ میں پاکستان کو سرمایہ کاری کے لیے ناسازگار ملک قرار دینا چاہتے تھے۔ گوادر پورٹ اور پاک چین اقتصادی راہداری کو ناکام بنانا چاہتے تھے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی بصیرت افروز حکمت عملی اور پاک فوج کے جرات مندانہ اقدامات نے ناپاک ارادوں کو خاک میں ملا دیا۔

انہوں نے کہا کہ کراچی میں بدامنی پیدا کرنے والے عناصر کو قابو کرنے کے لیے رینجرز نے شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے جس سے امید پیدا ہوچلی ہے کہ کراچی کی مارکیٹوں میں کاروباری سرگرمیاں جلد بحال ہوجائیں گی۔ اس لیے افتخار علی ملک نے کہا ہے کہ پاک فوج کی کارکردگی کو تنقید کا نشانہ بنانے کی کوشش کرنا کسی طور پسندیدہ عمل نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ کاروباری طبقہ ہمیشہ کی طرح پاک فوج کی پشت پر کھڑا ہے ا س لیے کہ ملک و قوم کے لیے پاک فوج کی قربانیاں ضرب عضب تک محدود نہیں بلکہ جب سے پاکستان معرض وجود میں آیا ہے ہر مشکل گھڑی میں پاکستانی افواج نے ملک و قوم کی گرانقدر خدمات سرانجام دی ہیں۔ اس لیے انہوں نے کہا ہے کہ سیاسی جماعتوں سمیت تمام طبقات تحفظ پاکستان اور تعمیر پاکستان میں حکومت اور پاک فوج کے دست و بازو بنیں۔

مزید : کامرس