گیس اور پٹر ولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ انڈسٹری کیلئے تباہ کن ہے: عرفان اقبال شیخ

گیس اور پٹر ولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ انڈسٹری کیلئے تباہ کن ہے: عرفان ...

لاہور(کامرس رپورٹر) پاکستان انڈسٹریل اینڈ ٹریڈرز ایسو سی ایشن فرنٹ(پیاف) نے یکم جولائی سے گیس اور پٹر ولیم مصنوعات کی قیمتوں میں مجوزہ اضافہ انڈسٹری کے لیے تباہ کن قراردیا ہے۔ پیاف کے چےئرمین عرفان اقبال شیخ نے کہا کہ یکم جولائی سے گیس کی قیمتوں میں صنعتی صارفین کے لیے 53فیصدجبکہ گھریلو صارفین کے لیے 18فیصد اور کھاد کے کارخانوں کے لیے 64 فیصدتک اضافہ کی خبروں پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ حالیہ بجٹ 2015 کے بعد انرجی مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ منی بجٹ ہے۔

اور انڈسٹری ا س کی متحمل نہیں ہوسکتی۔چےئرمین پیا ف عرفان اقبال شیخ نے کہا کہ قیمتوں کا تعین سال میں صرف ایک بار بجٹ کے موقع پر کیا جائے۔قیمتوں میں اضافہ سے مہنگائی کا نیا طوفان جنم لے گا۔رمضان المبارک کے با برکت ماہ میں حکومت نے مختلف اشیاء پر جو سبسڈی دے رکھی ہے۔اسکا اثر زائل ہو جائے گا۔مہنگائی کا براہ راست اثرعام صارفین پر پڑتاہے، چےئرمین پیاف نے کہاکہ حکومتی ادارے رمضان المبارک میں مہنگائی کو کنٹرول کرنے کی کوششس کر رہے ہیں۔لیکن انرجی مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ سے منافع خوروں کی حوصلہ افزائی ہوگئی،اور ملکی اور غیرملکی مصنوعات مہنگی ہوں گی۔ چےئرمیں عرفان اقبال شیخ نے حکومت سے اپیل کرتے ہوئے کہا ہے کہ انرجی مصنوعات کو مہنگا کرنے کی بجائے عوام کو مزید ریلیف دیاجائے۔ پیاف کے سنےئیر وائس چےئرمین تنویر احمد صوفی نے کہاحکومت کی جانب سے آئی ایم ایف کے مطالبہ پر آئندہ مالی سال سے گیس کی قیمتوں میں اضافہ سے صنعتوں پر اضافی بوجھ پڑے گا۔گیس کی قیمتوں میں اضافہ سے پیداواری لاگت میں اضافہ اور ملک میں مہنگائی بڑھے گی۔انہوں نے کہا کہ صنعتیں بجلی گیس کی لوڈ شیڈنگ اور ٹیکسوں میں اضافہ سے پہلے ہی متاثرہورہی ہیں اسی وجہ سے 2014-15 کیلئے جی ڈی بی کا ہدف بھی حاصل نہیں کیا جاسکا ہے ۔پیاف نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ اس فیصلہ کووایس لیا جائے۔

مزید : کامرس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...