راولپنڈی چیمبر کی قائمہ کمیٹی برائے فیڈرل ٹیکسیشن کا اجلاس

راولپنڈی چیمبر کی قائمہ کمیٹی برائے فیڈرل ٹیکسیشن کا اجلاس

راولپنڈی (کامرس ڈیسک) راولپنڈی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کی قائمہ کمیٹی برائے فیڈرل ٹیکسیشن کا اجلاس چیئرمین کمیٹی نجم ریحان کی زیر صدارت چیمبر میں منعقد ہوا جس میں صدر چیمبر سید اسد مشہدی، گروپ لیڈر شیخ شبیر، سابق صدور سہیل الطاف ، ایس ایم نسیم، ایس ایم عظیم،ڈاکٹر حسن سروش اکرم ،منظر خورشید شیخ،نائب چیئرمین کمیٹی توقیر بخاری،سینئر نائب صدر میاں ہمایوں پرویز، نائب صدر صبور ملک اور دیگر ارکان کمیٹی بھی شریک تھے۔اجلاس میں وفاقی بجٹ کے بعد ٹیکس کے حوالے سے حکومتی پالیسی پر اظہار خیال کرتے ہوئے چیئرمین کمیٹی نجم ریحان نے کہا کہ کاروباری برادری کے سیلز ٹیکس کو سنگل ڈیجٹ میں لانے کے مطالبے کو خاطر میں نہیں لایا گیا اور سابقہ شرح برقرار رکھی گئی ہے ،ود ہولڈنگ سیلز ٹیکس ایجنٹس کے مسئلے کو بھی حل نہیں کیا گیا اس کے علاوہ کاروباری برادری کے دیگر جائز مطالبات کو بھی کوئی اہمیت نہیں دی گئی

جس کے بعد کاروباری برادری مشترکہ لائحہ عمل کاپر غور کر رہی ہے

،انہوں نے کہا کہ بینکوں کے ساتھ ہر ٹرانزیکشن پر 0.6فیصد کی کٹوتی زیادہ ہے جس میں کمی کیجائے ۔اس موقع پر نائب چیئرمین کمیٹی توقیر بخاری نے کہا فنانس بل میں آڈٹ کی کلاز جس میں کوئی بھی شخص آڈٹ پینل میں شامل ہو سکتا ہے سے بلیک میلنگ کو جنم لے گا صرف فیلڈ سے وابتہ افراد کو ہی آڈٹ پینل میں شامل کیا جائے، گروپ لیڈر شیخ شبیر نے تجویزدیتے ہوئے کہا کہ ریٹرن جمع کرنے والے کو فائلر تصور کیا جائے ، سابق صدر سہیل الطاف نے وزیر خزانہ اسحق ڈار کے کاروباری برادری کے ساتھ رویے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وزیر موصوف نے بزنس کمیونٹی کے کسی مسئلے کو حل کرنے کیلئے سنجیدگی سے لیا ہی نہیں ،آخر میں اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے صدر چیمبر سید اسد مشہدی نے کہا کہ تمام چیمبرز کی پوسٹ بجٹ کانفرنس میں جو سفارشات مرتب کی گئیں تھیں اُن پر عملدرآمد کو یقینی بنایا جائے گا ۔

مزید : کامرس