ڈی ایچ اے اسٹیٹ ایجنٹس کا فیز 1تا 9تک کے ڈی سی ریٹس کی تجویز پر رتحفظات کا اظہار

ڈی ایچ اے اسٹیٹ ایجنٹس کا فیز 1تا 9تک کے ڈی سی ریٹس کی تجویز پر رتحفظات کا ...

لاہور(اپنے نمائندے سے)ڈی ایچ اے اسٹیٹ ایجنٹس ایسوسی ایشن نے ڈی ڈی او رجسٹریشن ٹاؤن کی جانب سے فیز 1سے لے کر 9تک کے ڈی سی ریٹس مقرر کر نے کی تجویز پر مزید تحفظات کا اظہار کر دیا ہے ،گزشتہ روز ڈی ایچ اے اسٹیٹ ایجنٹس ایسوسی ایشن کے وفد کی محکمہ ریونیو کے ایڈیشنل ڈسٹرکٹ کلکٹر جنرل اسفند یار بلوچ سے ملاقات ڈی سی ریٹس اضافہ پر نظر ثانی کا مطالبہ ،جبکہ بڑھتے ہوئے ڈی سی ریٹ کے پیش نظر حکومتی خزانے میں ریونیو کی نمایاں کمی کے حوالے سے بھی آگاہی دی گئی مزید معلوم ہواہے کہ گزشتہ روزڈی ایچ اے اسٹیٹ ایجنٹس ایسوسی ایشن کے جنرل سیکریٹری زاہد بن صادق کی سربراہی میں 100سے زائد ڈیلرز حضرات نے محکمہ ریونیو کے ایڈیشنل ڈسٹرکٹ کلکٹر ریونیو اسفند یار بلوچ سے ملاقات کی اور نشتر ٹاؤن کے سب رجسٹرار کی جانب سے 2015-16کے درمیان اضافے کے ساتھ ڈی سی ریٹس کے اطلاق پر شدید تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے آگاہی دی ہے کہ وفاقی حکومت کی جانب سے گزشتہ بجٹ میں جائیدادوں کی منتقلی پر پہلے سے موجود بھاری ٹیکسوں جن میں فروخت کنندہ اور خریدار کنندہ پر کیپٹل ویلیو ٹیکس،گین ٹیکس اورایڈوانس ٹیکس جبکہ صوبائی حکومت کی جانب سے فیصد سی وی ٹی ،اشٹام ڈیوٹی 3فیصد ،کینٹ بورڈ ٹرانسفر ٹیکس اور ٹی ایم اے ٹرانسفر ٹیکس ،کارپوریشن ٹیکس،کورڈ ایریا پر ٹیکس اور متعلقہ ہاؤسنگ سوسائٹی یا اتھارٹی کے بھاری ٹرانسفر اخراجات اور ہر سال ڈی سی ریٹس میں بے پناہ اضافے کی وجہ سے رئیل اسٹیٹ بزنس کو تباہی کے دھانے پر پہنچا دیا گیا ہے ،اب سب رجسٹرار نشتر ٹاؤن کی طرف سے آئندہ سال 2015-16کے ڈی سی ریٹس مقرر کرنے کے لئے ڈی ایچ اے لاہور فیز 1-9کے ڈی سی ریٹ کی جو فہرستیں آویزاں کی گئیں ہیں اس سے شہریوں اور خاص طورپر رئیل اسٹیٹ کا کاروبار کرنے والوں میں شدید بے چینی پیدا ہو گئی ہے کیونکہ اس کے تحت ڈی سی ریٹس میں اضافہ کیا جارہاہے ،گزشتہ سال حکومت وقت نے ڈی ایچ اے لاہور کے تمام فیز کے ڈی سی ریٹس بہت زیادہ بڑھا دئے تھے جس میں فیز 5میں 55فیصد،فیز 6میں 80فیصد اور فیز 7میں 83فیصد اضافہ کیا تھا جس کی وجہ سے فیزز میں خریدو فروخت کم ہونے اور ٹرانزیکشن والیم میں کمی کی وجہ سے حکومتی ریونیو میں بھی واضح کمی واقع ہوئی ،چند سال قبل ڈی ایچ اے اسٹیٹ ایجنٹس ایسوسی ایشن کی سابقہ کاوشوں سے ڈی سی ریٹس کم کئے گئے جس کی وجہ سے ٹرانزیکشن والیم میں نمایاں اضافہ اور خریدو فروخت بڑھنے حکومت کے ریونیو میں خاطر خواہ اضافہ ہوا،انہوں نے مزید کہا کہ ٹیکسوں کے بھاری بوجھ کی وجہ سے رئیل اسٹیٹ کا بزنس تباہ ہو رہا ہے جس کا براہ راست اثر پاکستا ن کی اکانومی پر پڑ رہا ہے ،پراپرٹی کی خریدو فروخت کم ہونے سے حکومتی ریونیو میں کمی ہونے کے ساتھ سرمایہ بھی پاکستانی مارکیٹ سے بیرون ملک چلا جائے گا ، ایڈیشنل ڈسٹرکٹ کلکٹر ریونیو لاہور اسفند یار بلوچ نے ڈی ایچ اے اسٹیٹ ایجنٹس کے وفد کو یقین دلایا کہ وہ اس معاملے پر نظر ثانی کریں گیں ،رئیل اسٹیٹ اورعوام کے مفادات اور بہتری کے لئے جو کچھ ہو سکا وہ کیا جائے گا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...