بجلی کی لوڈشیڈنگ کو کنٹرول کرنا اس حکومت کے بس کی بات نہیں،تنویر کائرہ

بجلی کی لوڈشیڈنگ کو کنٹرول کرنا اس حکومت کے بس کی بات نہیں،تنویر کائرہ

لاہور(نمائندہ خصوصی )پیپلز پارٹی پنجاب کے سیکریٹری جنرل، تنویر اشرف کائرہ نے کہا ہے کہ بجلی کی لوڈشیڈنگ کو کنٹرول کرنا اس حکومت کے بس کی بات نہیں اور وہ اس ضمن میں بری طرح ناکام ہوئی ہے۔ انہوں نے یاددلایا کہ پنجاب کے وزیراعلیٰ نے مینار پاکستان میں ہاتھ کا پنکھا لے کر پیپلز پارٹی کی حکومت کے خلاف بجلی کی لوڈشیڈنگ کے احتجاج کا ایک انوکھا انداز اپنایا تھا اور اب سارے پاکستان میں لوگ ہاتھ کے بنے ہوئے پنکھے لے کر اس حکومت کے خلاف سراپا احتجاج ہیں اور یہ حقیقت میں وزیراعلیٰ پنجاب کا مقافاتِ عمل ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس حکومت نے سحری اور افطاری میں بھی لوڈشیڈنگ کر کے اپنی نااہلی کا ثبوت دیا ہے۔ انہوں نے یاددلایا کہ پیپلز پارٹی کے دور میں سحری اور افطاری کے موقع پر کبھی لوڈشیڈنگ نہیں ہوئی تھی۔انہوں نے صوبہ سندھ کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ وہاں پر لوڈشیڈنگ کے حالات انتہائی خراب ہیں جہاں پر اندرون سندھ میں 20 سے 22 گھنٹے لوڈشیڈنگ ہو رہی ہے جبکہ کراچی میں 400 سے زائد لوگ گرمی کی شدت سے ہلاک ہو گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اب شہباز شریف کہاں اپنا منہ چھپائے پھرتے ہیں جنہوں نے لوڈشیڈنگ کو مہینوں میں کنٹرول کرنے کا دعوی کیا تھا لیکن اب 2 سال کے بعد وہ صرف 100 میگاواٹ بجلی نیشنل گرڈ میں شامل کرنے میں کامیا ب ہوئے ہیں جس کو دنیا میں سب سے مہنگی ترین بجلی کہا جا سکتا ہے کیونکہ بہاولپور سولر پارک میں یہ بجلی 30 روپے سے زائد فی یونٹ پڑ رہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ نندی پور پاور پراجیکٹ افتتاح کے بعد سے بند پڑا ہے جس پر اس حکومت نے مکمل کرنے کے لیے قومی خزانے سے اربوں روپے خرچ کر دئیے لیکن وہاں بجلی پیدا ہی نہیں کی جارہی۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب کے وزیراعلیٰ نے جھوٹ بول کر لوگوں سے ووٹ لئے لیکن وہ لوگوں کو لوڈشیڈنگ میں ریلیف دینے کی بجائے تکلیف دینے کا باعث بنے ہیں۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ وہ جھوٹ بولنے پر قوم سے معافی مانگیں تا کہ ان کا نام تبدیل کرنے کی نوبت نہ آئے جس کا انہوں نے برملا اعلان کیا تھا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...