شہروں میں پانچ اور دیہی علاقوں میں آٹھ گھنٹے کی لوڈشیڈنگ ، شارٹ فال تین ہزار میگاواٹ رہ گیا: خواجہ آصف

شہروں میں پانچ اور دیہی علاقوں میں آٹھ گھنٹے کی لوڈشیڈنگ ، شارٹ فال تین ہزار ...
شہروں میں پانچ اور دیہی علاقوں میں آٹھ گھنٹے کی لوڈشیڈنگ ، شارٹ فال تین ہزار میگاواٹ رہ گیا: خواجہ آصف

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی وزیرپانی وبجلی خواجہ آصف نے کہاہے کہ ملک بھر میں تین ہزار میگاواٹ بجلی کی قلت کا سامنا ہے ، شہروں میں پانچ اور دیہی علاقوںمیں صرف آٹھ گھنٹے لوڈشیڈنگ کی جارہی ہے ، ترسیل کا نظام بہتر ہوا اور گذشتہ سال کی نسبت 389گیگاواٹ بجلی زیادہ پیداکی ، بلوچستان میں کسی قسم کامسئلہ نہ ہونے پر وزارت پانی و بجلی کو مبارکبادیں موصول ہوئیں ۔

سپیکر سردار ایازصادق کی زیرصدارت ہونیوالے قومی اسمبلی کے اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے وزیرپانی وبجلی خواجہ آصف نے کہاکہ صبح 9بجے بجلی کی پیداوار 13,144میگاواٹ اور طلب 16645میگاواٹ تھی ، پہلے رمضان سے بجلی کا بحران پیداہوا، بلوچستان اور خیبرپختونخواہ میں زیادہ بجلی دے رہے ہیں ، پنجاب اورسندھ میں بھی ترسیل بہتر ہوئی۔

اُنہوں نے دعویٰ کیاکہ اسلام آباد کے گردافغان بستیوں کی وجہ سے بجلی کی چوری زیادہ ہے ، چند ماہ قبل دواہلکار بھی قتل کردیئے گئے جن کے قاتل افغانستان میں ہے ، تین روز کے لیے علاقے کی بجلی کاٹی گئی لیکن امن وامان کے مسئلے کے خدشے کے پیش نظر دوبارہ بجلی بحال کردی گئی ۔اُنہوں نے کہاکہ میپکو اور فیسکو کے واجبات کی وصولی 100فیصد،آئیسکو کی 89فیصد، حیبکو کی 73فیصداور سیپکو کی 58فیصد ہے ۔ خواجہ آصف کاکہناتھاکہ سابق حکومت کی مجرمانہ غفلت کا عذاب قوم جھیل رہی ہے ، بجلی کی ترسیل کے نظام میں گزشتہ دوسال میں بہتری آئی ۔

یادرہے کہ موسم میں تبدیلی کی وجہ سے بجلی کی مانگ میں بھی کمی ہوئی ہے جس کی وجہ سے شارٹ فال کم ہوا۔

مزید : بزنس /اہم خبریں