اپوزیشن لیڈر کے آئینہ دکھانے پر وزیرپانی و بجلی بھی ’آپے سے باہر ‘ہوگئے

اپوزیشن لیڈر کے آئینہ دکھانے پر وزیرپانی و بجلی بھی ’آپے سے باہر ‘ہوگئے
اپوزیشن لیڈر کے آئینہ دکھانے پر وزیرپانی و بجلی بھی ’آپے سے باہر ‘ہوگئے

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) اپوزیشن لیڈر کی طرف سے کراچی میں ہلاکتوں اور لوڈشیڈنگ پر وفاقی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنائے جانے پر وزیرپانی وبجلی خواجہ آصف بھی آپے سے باہر ہوگئے اورقومی اسمبلی میں کراچی میں گرمی سے ہونیوالی ہلاکتوں پر گرما گرم بحث ہوئی ۔

سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق کی زیرصدارت ہونیوالے اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے خواجہ آصف کاکہناتھاکہ بجلی کی صورتحال پر بات نہ کرنا ناانصافی ہوگی ، سکھر کے ایک فیڈر سے 80کروڑ روپے لینے ہیں ، کراچی میں ہونیوالی ہلاکتوں کی ذمہ داری قطعی طورپر وفاقی حکومت یا وزارت پانی وبجلی نہیں ، لوگوں کی اموات کاتعلق بجلی سے نہیں ، خود سوچیں کہ اگر کراچی کو بجلی دینا وفاق کی ذمہ داری ہے تو ہم حاضر ہیں ، کے الیکٹرک وفاق سے سستی بجلی لیتاہے اور منافع کماتاہے ، تھر میں جواموات ہوئیں ، وہ بھی وفاق کے کھاتے میں ڈال دی گئیں ، اپوزیشن لیڈر نے گذشتہ پانچ چھ دن سے اُن کا احساس نہیں کیا، اگر وہ کرتے تو اخلاقی طورپر ہمیں بھی ان کا احساس کرناپڑتا، جو بجلی چوری کرتے ہیں ، ڈنکے کی چوٹ پر ان کا نام لیں گے ،سندھ حکومت کے مختلف اداروں نے کے الیکٹرک کے 57کروڑروپے دینے ہیں، پانی کی چوری کی ذمہ داری بھی وزارت پانی وبجلی پر ڈالی گئی جو افسوسناک اور سندھ حکومت کی سراسر ناکامی ہے ۔

اپوزیشن لیڈر سید خورشید شاہ کا موقف جاننے کیلئے یہاں کلک کریں ، کھری کھری سنادیں ۔ 

خواجہ آصف نے کہاکہ ایم کیوایم کے رہنماءفاروق ستار نے اُنہیں بتایاتھا کہ کراچی میں ایک ایک باﺅزر سے کروڑوں روپے کمائے جارہے ہیں ۔اُنہوں نے کہاکہ پنجاب کے فیڈر زمیں بجلی کے لاسز14سے 15فیصد ہیں جبکہ خیبرپختونخواہ کے 238فیڈرز میں 95فیصد لاسز ہیں ۔

ایم کیوایم ارکان کی طرف سے جملے بازی پر خواجہ آصف اُن پر بھی برہم ہوگئے اور اُن کی طرف دیکھتے ہوئے کہاکہ ’آپ کی بھی لوڈشیڈنگ ہونی والی ہے‘۔

مزید : اسلام آباد /اہم خبریں