متحدہ قومی موومنٹ پر ایک مرتبہ پھرسنگین الزام لگ گیا، برطانوی نشریاتی ادارے نے ’دھماکہ‘ کردیا

متحدہ قومی موومنٹ پر ایک مرتبہ پھرسنگین الزام لگ گیا، برطانوی نشریاتی ادارے ...
متحدہ قومی موومنٹ پر ایک مرتبہ پھرسنگین الزام لگ گیا، برطانوی نشریاتی ادارے نے ’دھماکہ‘ کردیا

  

لندن (مانیٹرنگ ڈیسک) معتبر برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی نے دعویٰ کیاہے کہ بھارت پاکستان کی سیاسی جماعت متحدہ قومی موومنٹ کی مالی مدد کرتاہے جس کا اعتراف ایم کیوایم کے دوسینئر رہنماﺅں نے 2012ءمیں سکاٹ لینڈیار ڈ کے روبرو تفتیش کے دوران کیا۔

بی بی سی نے بتایاکہ جون 2013ءمیں لندن میں ایم کیوایم کے اعلیٰ عہدیدار کے ایک گھر پر چھاپے کے دوران دھماکہ خیز مواد اور ہتھیاروں کی فہرست ملی ،ملنے والی فہرست میں خریداگیااسلحہ اور رقم کی تفصیلات تھیں جو ممکنہ طورپر کراچی میں استعمال ہوناتھا۔ رپورٹ کے مطابق 2005ء سے پہلے درمیانی درجے کے رہنماوٗں کوٹریننگ دی جاتی تھی لیکن اس کے بعد نچلے درجے کے لوگوں کی بھی ٹریننگ شروع ہوگئی ۔ بی بی سی نے دعویٰ کیاکہ ایم کیوایم سے رابطہ کرنے کی کوشش کی گئی تو کسی نے موقف دینے سے انکار کردیا جبکہ ایم کیوایم کو الزامات پر کئی سوالات بھیجے گئے جن کا جواب نہیں ملا جبکہ اِسی طرح کے سوال بھارت سے پوچھے گئے لیکن ان کا بھی تاحال جواب نہیں ملا۔ 

یادرہے کہ تقریباً اِسی طرح کی کہانی بی بی سی پہلے بھی منظر عام پر لاچکاہے لیکن ایم کیوایم اس کی تردید کرتی رہی جبکہ اس خبر کے بریک ہونے سے چند گھنٹے ہی پاکستان کے وزیردفاع خواجہ آصف نے اسمبلی میں ایم کیوایم اراکین کی طرف سے جملے کسے جانے پر کہاتھاکہ ’آپ کی لوڈشیڈنگ شروع ہونے والی ہے‘۔

مقامی میڈیا کے ذرائع کے مطابق بی بی سی پر خبر بریک کرنیوالے نمائندہ خصوصی بینٹ جونزچند دن قبل پاکستان کے دورے پر تھے اور اُنہوں نے شاید معلومات پاکستان سے بھی حاصل کیں لیکن یہاں یہ واضح رہے کہ بی بی سی نے بھارتی خفیہ ایجنسی نہیں بلکہ بھارتی سرکارکی طرف سے فنڈ لینے کا دعویٰ کیاہے ۔

مزید : قومی /Headlines