ملک غیرجمہوری قوت کا متحمل نہیں ہوسکتا:نثار کھوڑو

ملک غیرجمہوری قوت کا متحمل نہیں ہوسکتا:نثار کھوڑو

  

لاڑکانہ(این این آئی) پاکستان پیپلزپارٹی سندھ کے صدر نثار احمد کھوڑو نے کہا ہے کہ ملک غیرجمہوری قوت کا متحمل نہیں ہوسکتا اس لئے پیپلزپارٹی ملک میں جمہوریت کا تسلسل چاہتی ہے ملک میں ایک وزیراعظم کے جانے اور دوسرے وزیراعظم کے آنے سے کوئی فرق نہیں پڑے گا ، نوازشریف پانامہ کیس سے بری ہونے تک اپنی جماعت کا کوئی اور وزیراعظم لائیں۔ان خیالات اظہار انھوں نے جمعے کے روز لاڑکانہ شہر میں ترقیاتی کاموں کا جائزہ لینے اور شھر کا دورہ کرنے کے موقعے پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ نثار کھوڑو نے کہا کے نوازشریف پانامہ لیکس معاملے میں بند گلی میں پھنس چکے ہیں اور ن لیگ نوازشریف کو پتلی گلی سے نکالنے کے لئے ملک میں قبل از وقت انتخابات کا حربہ استعمال کرسکتی ہے مگر ن لیگ کو بھاگنے نہیں دینگے۔ انھوں نے کہا کے نوازشریف استعفی دے کر دوسرا وزیراعظم لائیں اور اسمبلیوں کومدت پوری کرنیدیں ورنہ انھیں پتلی گلی بھی ھاتھ نہیں آئے گی۔ انھوں نے کہا کے اگر وقت سے قبل قومی اسمبلی تحلیل کی گئی تو صوبائی اسیمبلیاں موجود رھینگی اور اگر نوازشریف قبل از وقت انتخابات کرائینگے تو ناکام ہونگے۔ انھوں نے کہا کے نوازشریف ایسی صورتحال میں آمر ضیاء الحق اور ان کی8ویں ترمیم کو یاد کررھے ہونگے۔انھوں نے کہا کے شریف خاندان پانامہ کیس میں سپریم کورٹ کے سامنے منی ٹریل کے ثبوت پیش نہیں کر سکیوہ جی آئی ٹی کے سامنے کیا ثبوت پیش کرینگے۔ انھوں نے کہا کے سندھ کی تقسیم کی باتیں کرنے والے خود دھڑوں میں تقسیم ھوچکے ہیں۔اور سندھ کی تقسیم کسی کیخواب میں ھوسکتی ہے مگر ھمارے جیتے ہوئے سندھ کی تقسیم نہیں ھوسکتی۔نثار کھوڑو نے کہا کے کراچی اور سندھ کا لفظ استعمال کرنے والوں پر بھی اعتراض ہے اور رہے گا۔انھوں نے کہا کے کراچی سندھ کا حصہ ہے اور کراچی پورٹ کی کمائی پورے سندھ کی کمائی ہے اس لئے جولوگ پورٹ کی کمائی کو صرف کراچی کی کمائی گنوا رہے ہیں جس پر افسوس ہے۔نثار کھوڑو نے کہا کے سندھ نے دل بڑا کرکے مھاجرین کو دل سے قبول کیا اس لئے کچھ لوگ نفرت پھیلانے کی باتیں نہیں کریں اور ھم سندھ کے خلاف کوئی بات برداشت نہیں کرینگے۔ نثار کھوڑو نیایک سوال کے جواب میں کہا کے وفاقی حکومت سندھ سمیت چھوٹے صوبوں کو حقوق نہیں دے رہی اور سندھ کو مسلسل نظر انداز کرکے آمروں کی روش دھرائی جا رھی ہے۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -