اسرائیلی ڈاکٹروں نے فلسطین کے ایک ہزار بچوں کو طبی تجربات پر قربان کر دیا

اسرائیلی ڈاکٹروں نے فلسطین کے ایک ہزار بچوں کو طبی تجربات پر قربان کر دیا
اسرائیلی ڈاکٹروں نے فلسطین کے ایک ہزار بچوں کو طبی تجربات پر قربان کر دیا

  

تل ابیب(آئی این پی) فلسطین کے مظلوم مسلمانو ں پر اسرائیلی فوج کے مظالم کسی سے ڈھکے چھپے نہیں ہیں ،اسرائیل ہمیشہ سے فلسطینیوں پر ظلم کر تا آ رہا ہے، اسرائیلی ڈاکٹروں نے فلسطین کے ایک ہزار بچوں کوطبی تجربات پر قربان کر دیا ہے۔

بنگلہ دیش ‘ سیمنٹ سے لدا ٹرک سڑک کنارے کھڑے لوگوں پر چڑھ دوڑا ، 16 افراد ہلاک، 8 زخمی

غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق اسرائیلی ڈاکٹرز بھی سفاکیت میں کسی سے کم نہیں انھوں نے 1950کے عشرے میں لا پتا ہونے والے مسلمانوں کو تجربات کی بھینٹ چڑھا دیا تھا۔ اسرائیل کے قیام کے کچھ وقت بعد 1950 کی دہائی میں یمن اور بلقان سے تعلق رکھنے والے ایک ہزار بچے اسرائیل میں اچانک گم ہو گئے تھے اور آج تک کسی کو یہ معلوم نہیں ہوسکا تھا کہ ان بچوں کو زمین کھا گئی یا آسمان نگل گیا۔اس کے بعد اسرائیلی پارلیمنٹ نے ایک خصوصی تحقیقاتی کمیشن بھی تشکیل دیا تھا جس نے 97۔1996 میں اپنی رپورٹ مرتب کر لی تھی لیکن وہ رپورٹ کبھی منظر عام پر نہیں آئی۔

مزید :

بین الاقوامی -