کیپٹن صفدر سے جے آئی ٹی میں پانچ گھنٹے تک تفتیش کی اندرونی کہانی سامنے آ گئی

کیپٹن صفدر سے جے آئی ٹی میں پانچ گھنٹے تک تفتیش کی اندرونی کہانی سامنے آ گئی
کیپٹن صفدر سے جے آئی ٹی میں پانچ گھنٹے تک تفتیش کی اندرونی کہانی سامنے آ گئی

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن )وزیراعظم نوازشریف کے دامادکیپٹن صفدر سے جے آئی ٹی میں پانچ گھنٹے تک تفتیش کی اندرونی کہانی سامنے آ گئی ہے ۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم کے دامادکیپٹن صفدر آج پاناما کیس کی تحقیقات کرنے والی جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہوئے اور انہو ں نےاپنا بیان ریکارڈ کر وا دیاہے تاہم اب پیشی کی اندرونی کہانی سامنے آ گئی ہے جس میں انتہائی حیران کن انکشافات ہوئے ہیں ۔ذرائع کا کہناہے کہ وزیر اعظم کے داماد کو 20منٹ تک انتظار کرنا پڑاتاہم پیشی کے دوران کیپٹن صفدر سے بار بار ان کی اہلیہ اور اور شریف خاندان کی دولت کے بارے میں سوالات کیے گئے۔اس موقع پر کیپٹن صفدر نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ میرا تعلق صرف اپنی بیوی سے ہے ان کی آبائی دولت کے ساتھ نہیں اورنہ مجھے ان کی آبائی دولت سے دلچسپی ہے،انہوں نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے میری نظر میں پاناما کیس اٹھاون /ٹوبی کی نئی شکل ہے،یہ کیس نواز شریف کو کاشغر گوادر راہداری کی سزا ہے۔

ذرائع کے مطابق پیشی کے دوران جے آئی ٹی کے ایک رکن نے ان سے کہا کہ آپ سیاسی بات کر رہے ہیںاس پر کیپٹن صفدر نے بات کرتے ہوئے کہا کہ یہ سیاسی نہیں ملک کے مستقبل کی بات ہے۔تفتیش کے دوران کیپٹن صفدر نے اعتراض کیا کہ وہی سوال کیے جا رہے جو حسن اور حسین سے کر چکے ہیں، ایک موقع پر کیپٹن صفدر نے جے آئی ٹی سے کہا کہ آپ کو مجھے پیشگی سوال بھیجنے چاہیے تھے۔

واضح رہے کہ کیپٹن صفدر نے پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ پاناما کیس نظریہ پاکستان کیخلاف ہے ، یہ نوازشریف کا نہیں دو قومی نظریے کا احتساب ہے۔ عمران خان خد اکے لیے پاکستان کیخلاف سازشوں سے اپنے آپ کو دور کرو۔”وزیر اعظم کا داماد ہونے کے باوجود دس مرلے کا گھر ہے“۔ منی ٹریل بھی دونگا اور دستاویز بھی۔

مزید :

قومی -