سیاسی مخالفین کو ٹارگٹ کرنے کیلئے،پولیس کا ارکان اسمبلی کا غلام بنانے کی تیاریاں،سی پی او ملتان کا مراسلہ

سیاسی مخالفین کو ٹارگٹ کرنے کیلئے،پولیس کا ارکان اسمبلی کا غلام بنانے کی ...

ملتان (وقائع نگار)  تبدیلی سرکار کا ایک اور کارنامہ سامنے آگیا. پنجاب پولیس اب سیاسی مقاصد کیلئے بھی استعمال ہوگی.حالانکہ تبدیلی سرکار کا عوام سے کیا گیا وعدہ کہ پولیس ریفارمز کر کے پنجاب پولیس کو سیاسی مقاصد کیلئے استعمال نہیں ہونے دیں گے،جو دعوے دھرے کا دھرے رہ گئے۔اسی حوالے سے سی پی او ملتان عمران محمود نے ایک مراسلہ جاری کیا ہے۔کہ ہر ایس ایچ او اپنے متعلقہ علاقے میں رہنے والے تمام تحریک انصاف کے پارلیمنٹیرین(بقیہ نمبر58صفحہ12پر)

 کے کام ہنگامی بنیادوں پر کریں۔اگر وہ اپکو کال کریں تو آپ ہوں تو بعد فرصت انکو کال کریں۔انکا ہر جائز کام ترجہی بنیادوں پر کریں۔پولیس کے تمام معاملات میں ان سے مشاورت کی جائے اور ان کے ساتھ مکمل رابطہ میں رہیں.مراسلے میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ عدم تعاون کرنے والے کے ساتھ محکمانہ سخت کارروائی کی جائے گی۔جبکہ ضلعی پولیس نے مراسلے کی اطلاعی  کاپی وزیر اعلیٰ پنجاب، آئی جی افس سمیت اعلیٰ حکام کو بھی ارسال کر دی ہے۔دوسری جانب ملتان پولیس کے جوانوں نے حکومت کے اس اقدام کو غیر قانونی قرار دے دیا ہے۔انکا کہنا ہے اس اقدام سے انصاف کی راہ میں رکاوٹ حائل ہوا کرے گی۔کیونکہ سیاستدان اپنے مخالفین سیاسی افراد کے خلاف جھوٹے پرچے درج کروانے میں اہم کردار ادا کیا کرے گے۔ایسا لگتا ہے محکمہ پولیس کو ستاستدانوں کی "باندھی " بنا دیا ہے۔

غلام

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...