پاکستان اور سعودی عرب کے تعلقات اسلامی اخوت کے آئینہ دار ہیں، ساجد میر

 پاکستان اور سعودی عرب کے تعلقات اسلامی اخوت کے آئینہ دار ہیں، ساجد میر

لاہور (خصوصی رپورٹ)سعودی وزارت مذہبی امور مکہ کے مدیر سراج بن سعید الزہرانی نے کہا ہے کہ اسلام اعتدال کا دین ہے۔ مسلمان میانہ روی اختیار کریں۔ انتہا پسندی اور غلو فی الدین نے اسلام کے خو بصورت چہرے کو مسخ کیا ہے۔ سعودی عرب اتحادبین المسلمین کا علمبردار ہے۔سعودی عرب نے ہر آزمائش او ر ہر کڑے وقت میں پاکستان کا ساتھ دیاہے۔ خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعز(بقیہ نمبر42صفحہ12پر)

یز امت مسلمہ کے درمیان اتحاد و یگانگت کے لیے کوشاں ہیں۔سعودی عرب اور پاکستان کے عوام اسلامی اخوت کے عظیم رشتے میں منسلک ہیں اور ان کے دل ایک ساتھ دھڑکتے ہیں۔ حر مین شریفین امت ِ مسلمہ کے دینی اور روحانی مراکز ہیں جن کے تحفظ سلامتی اور دفاع کے لئے پاکستان کا جذبہ قابل قدر ہے۔ اس امر کا اظہار انہوں نے وزارت مذہبی امور سعودی عرب اور مرکزی جمعیت اہل حدیث کے اشتراک سے مرکز راوی روڈ میں منعقدہ علماء کی تربیتی ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان اور سعودی عرب  شدت پسندی اور انتہا پسندی کے خاتمے کے لیے مشترکہ جدوجہد کررہے ہیں۔ سعودی عرب اور پاکستان کے درمیان اخوت، بھائی چارے کا جذبہ ہمیشہ کے لئے قائم رہے گا۔ سربراہ مرکزی جمعیت اہل حدیث پروفیسر ساجد میر نے کہا کہ پاکستان اور سعودی عرب کے تعلقات اسلامی اخوت کے آئینہ دار ہیں۔سعودی عرب اپنے بجٹ میں سے سب سے پہلے حرمین شریفین کے لیے رقم مختص کرتا ہے۔سعودی عرب نے ہمیشہ اتحاد عالم اسلام کے لئے ہمیشہ کلیدی کردار ادا کیا ہے۔ پاکستانی سعودی عرب کو اپنا دوسرا گھر سمجھتے ہیں کیونکہ فرمانروا حرمین شریفین کے خدمت گار ہونے کے علاوہ امتِ مسلمہ کے امام ہونے کا درجہ رکھتے ہیں۔ پاکستانی انہیں نہایت ہی قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔ دیگر مقررین عبدالمالک مجاہد،حافظ ابتسام الہی ظہیر،پروفیسر یاسین ظفر، علامہ شفیق خاں پسروری، ڈاکٹر عزیز الرحمن، قاری خلیل الرحمن جاوید، ڈاکٹر عتیق الرحمن شاہ، مولانا عبدالستارحامد،ڈاکٹر حافظ انور،قاری صہیب میر محمدی،مولانا عبدالرشید حجازی، مولانا احسان اللہ ساجد نے  اپنے مقالات میں کہا کہ عقائداور فکر نظرمیں تحمل،برداشت،اعتدال اور توسط سے ہر شئے کو استحکام نصیب ہوتا ہے۔

ساجد میر

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...