پیپلز پارٹی نے بھی میثاق معیشت کی پیشکش واپس لے لی

پیپلز پارٹی نے بھی میثاق معیشت کی پیشکش واپس لے لی

اسلام آباد (این این آئی،صباح نیوز)پاکستان مسلم لیگ (ن) کے بعد پاکستان پیپلز پارٹی نے بھی میثاق معیشت کی پیشکش واپس لے لی۔ایک انٹرویومیں سینئر پارٹی رہنما اور سابق قائد حزب اختلاف خورشید شاہ نے میثاق معیشت پر سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کی طرف سے پارلیمانی کمیٹی کی مخالفت کر تے ہوئے کہا کہ اس معاملے پر وزیراعظم خود حزب اختلاف سے بات کریں۔انہوں نے کہا کہ آصف زرداری کے معیشت پر تعاون کے سنجیدہ بیان کا مذاق اڑایا گیا وزیراعظم اس پر وزرا ء سے وضاحت طلب کریں۔ انہوں نے کہاکہ بجٹ منظوری رکوانے کیلئے پیر کے روز حکومتی اتحادیوں کے ساتھ بات کی جائے گی۔جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کے اسلام آباد کے ممکنہ لاک ڈاؤن پر خورشید شاہ نے کہا کہ مولانا کو قائل کریں گے کہ ایسا نہ کریں۔چیئرمین سینیٹ کی تبدیلی پر مریم نواز اور بلاول بھٹو کے اتفاق کی خبروں پر خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ ابھی اس پر پیپلز پارٹی کی کوئی رائے نہیں ہے، کل جماعتی کانفرنس (اے پی سی) میں دوسری جماعتوں کی رائے سنیں گے۔

خورشیدشاہ 

اسلام آباد (این این آئی،صباح نیوز)اپوزیشن بجٹ رکوانے کیلئے حکومتی ا تحادیوں سے آج پیر کو بات کریگی۔پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ (ن)کے رہنماؤں کی جانب سے آئندہ مالی سال کا بجٹ کسی صورت پاس نہ ہونے کیلئے اختر مینگل سمیت حکومتی اتحادیوں سے رابطے کا دعویٰ کیا گیا ہے۔پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما سید خورشید شاہ کے مطابق بجٹ منظوری رکوانے کیلئے آج پیر کو حکومتی اتحادیوں کے ساتھ بات کرینگے۔دریں اثنااپوزیشن جماعتوں کو آل پارٹیز کانفرنس کا مجوزہ ایجنڈا پیشگی بھجوائے جانے کا امکان ہے۔ اپوزیشن جماعتیں اپنے اپنے فورمز پر ایجنڈا کے بارے میں مشاورت اور تیاری کر کے 26 جون کو اے پی سی میں شریک ہونگی۔ ذرائع کا دعویٰ ہے کہ فوری عام انتخابات کا مطالبہ، حکومت مخالف تحریک کے روڈ میپ کی تیاری، اہم سیاسی تبدیلیوں، مہنگائی کے خلاف مشترکہ جلسے اے پی سی کے ایجنڈے کے مشترکہ نکات ہو سکتے ہیں۔ ایجنڈے پر عملدرآمد کے لئے اپوزیشن کی طرف جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے قیام کا بھی امکان ہے۔ ایوان کے مطابق اے پی سی میں پاکستان مسلم لیگ (ن) پاکستان پیپلزپارٹی، بڑی دینی جماعتیں عوامی نیشنل پارٹی پختونخوا ملی پارٹی، نیشنل پارٹی، بلوچستان نیشنل پارٹی اور دیگر قوم پرست جماعتوں کی اعلیٰ قیادت شریک ہو گی۔ اے پی سی کے انعقاد کے لئے تقریباً ہوم ورک مکمل کر لیا گیا ہے۔

اتحادی بات چیت

مزید : صفحہ اول


loading...