نواز شریف کا بیانیہ آئین کی زبان،میثاق معیشت پر مریم کی بات درست ہے،خواجہ آصف

نواز شریف کا بیانیہ آئین کی زبان،میثاق معیشت پر مریم کی بات درست ہے،خواجہ ...

سیالکوٹ(بیورورپورٹ، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوزایجنسیاں) مسلم لیگ (ن) کے سینئر رہنما خواجہ آصف کا کہنا ہے کہ شہباز شریف نے میثاق معیشت کی تجویز پیش کی تھی اور مریم نواز نے میثاق معیشت پر جو بات کی وہ بات بھی درست ہے۔سیالکوٹ میں اپنی رہائش گاہ پر پریس کانفرنس کرتے ہوئے خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ معیشت پر محاذ آرائی نہیں ہونی چاہیے، تمام سیاسی قوتوں کو ایک پیج پر ہونا چاہیے اور حکومت بات کرنا چاہتی ہے تو بجٹ پر اپوزیشن کی تجاویز پر عمل کرے۔خواجہ آصف نے کہا کہ مریم نواز کا ایک اپنا سیاسی مستقبل ہے۔مریم نواز کا میثاق معیشت پر اختلافات اس بات کی شہادت ہے کہ ہمارے باہر بھی اور پارٹی میں بھی جمہوریت ہے۔میاں شہباز اور مریم نواز کے درمیان کوئی مقابلہ نہیں، اگر انہوں نے میثاق معیشت کو مذاق کہا ہے تو درست ہے، میاں شہباز ہمارے پارٹی کے صدر ہیں اور میاں نواز کو میاں شہباز شریف پر مکمل اعتماد ہے۔انہوں نے کہا کہ ایک بات ہمیں آج بھی متحد رکھے گی وہ میاں نواز کی قیادت ہے، میاں صاحب کا بیانیہ آئین کی زبان ہے، آج اگر میرے یا مریم یا شہباز کے مؤقف کی اہمیت ہے تو وہ نواز شریف کے بیانیے کا امتزاج ہے۔خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ حکومت تمام اقدامات کرچکی، میثاق معیشت پر ٹھوس بات نہیں ہوسکتی، ہماری خواہش ہے کہ ملک ترقی کرے لیکن حکومت کی پالیسی درست نہیں، نئی صورتحال میں ڈالر کی قیمت مزید بڑھ جائے گی۔لیگی رہنما نے کہا کہ بجٹ عوام دشمن ہے، بزنس فرینڈلی نہیں، یہ بجٹ معیشت کو مزید خراب اور کاروبار کو تباہ کرے گا، پہلے کاروبار اور غریب عوام کو ریلیف ملے پھر میثاق معیشت پر بات ہو، اگر حکومت پْرخلوص ہے تو پہلے عوام دشمن بجٹ پر بات کرے۔انہوں نے حکومت کو مشورہ دیا کہ آئی ایم ایف اور باہر سے معاشی ڈاکٹر بلانے کے بجائے اندر سے رائے لی جائے، پیپلز پارٹی اور مشرف دور کے لوگ دوبارہ آگئے ہیں اور وہ اپنے چاہنے والوں کے مرضی سے اقدامات لیتے ہیں۔ہم معیشت کے قتل میں شامل نہیں ہوں گے۔انہوں نے گجرات کو ڈویژ ن بنائے جانے کی اطلاعات پر اپنے ردعمل میں کہاکہ اگر گجرات کو ڈویژن بنایا گیا تو سیالکوٹ کا حق مارنے پر میں آگے ہوں گا۔عمران خان جن کو کبھی ڈاکو کہتے تھے آج انکو عزت دے رہا ہے۔چوہدری شجاعت کو عمران خان ڈاکو کا خطاب دیا کرتا تھا یا وہ کل غلط تھے یا آج غلط ہیں۔موجودہ ماحول میں حکومت نے جو غریب عوام پر ظلم ڈھانا تھا ڈھا چکی ہے۔جب تک یہ ماحول ٹھیک نہیں ہوگا تب تک میثاق معیشت پر بات نہیں ہو سکتی۔

خواجہ آصف 

مزید : صفحہ اول


loading...