دہشتگردی کیخلاف چین کا قائدانہ کردار مؤثر ثابت ہوگا،چائنا ڈیلی

  دہشتگردی کیخلاف چین کا قائدانہ کردار مؤثر ثابت ہوگا،چائنا ڈیلی

  



بیجنگ(آئی این پی)پاکستان اور کچھ دیگر ممالک نے ’دہشت گردی مخالف عالمی فورم‘ میں اظہار خیال کرتے ہوئے دنیا بھر میں امن اور استحکام کے فروغ کیلئے چینی کوششوں کی تعریف کی ہے،فورم میں اپنے ممالک کی نمائندگی کرتے ہوئے انہوں نے توقع ظاہر کی کہ دہشت گردی کے مقابلے کیلئے چین کا قائدانہ کردارمطلوبہ نتائج حاصل کرنے کیلئے مؤثر ثابت ہوگا۔فورم کی میزبانی چین کی عوامی مسلح پولیس فورس (پی اے پی) نے کی۔گریٹ وال 2019دہشت گردی مخالف عالمی فورم چار روز جاری رہنے کے بعد گزشتہ روز ختم ہوگیا۔فورم میں اس عزم کا اظہار کیا گیا کہ دہشت گردی کے خاتمے کیلئے مشترکہ کوششیں کی جانی چاہیئں۔فورم میں پاکستان،چین، فرانس،اسرائیل اور ازبکستان سمیت 31ممالک کی فوج اور پولیس کے 240سے زائد نمائندوں نے شرکت کی۔فورم کے دوران شرکاء پانچ سیمینارز میں بھی شریک ہوئے جس میں سوال جواب کا سیشن، فوجی تربیت اور دہشت گردی کے خلاف تربیتی سہولتوں کا بھی جائزہ لیا گیا۔چین کے معروف اخبار پیپلزڈیلی کے مطابق برازیل کی فیڈرل ڈسٹرکٹ ملٹری پولیس کے آپریشن کمانڈر واسلے سنتوس نے کہا کہ فورم تبادلہ خیال کیلئے اہم مواقع فراہم کرتا ہے۔برازیل اور چین ایک دوسرے سے کافی فاصلے پر ہیں،  ذاتی طور پر دیکھنے سے پہلے میں نہیں جانتا تھا کہ دہشت گردی کا مقابلہ کرنے کیلئے پی اے پی کی اہلیت کس قدر متاثر کن ہے۔رومانیہ کے جورجی فلوریا کا کہنا تھا کہ پی اے پی کی تربیت،حقیت اور چیلنجز کے بالکل قریب ہے ۔انہوں نے کہا کہ چین کے پی اے پی اہلکاروں نے بہت زبردست کام کیا ہے۔مالدیپ کی وزارت داخلہ بٹالین کمانڈر جنرل انسپیکٹروریٹ ڈومترو سٹوئیکا نے کہا گریٹ وال 2019دہشت گردی مخالف عالمی فورم ایک اعلیٰ معیار کا ایونٹ ہے جس میں پی اے پی کے مختلف تربیتی مظاہرے اور شاندار سہولتوں کا اظہار ہوا ہے۔میں بہت سارے مفید تجربات لے کر واپس جا رہا ہوں،وینو ایٹو موبائل فورس کے سارجنٹ ولی جیفری ومبونگ نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ فورم دنیا بھر میں اپنے ہم منصبوں کے درمیان علم کی توسیع اور پھیلاؤ کا فورم ہے،اب ہم مستقبل کی ضروریات پوری کرنے کیلئے بہتر طور پر آراستہ ہیں۔

مزید : عالمی منظر


loading...