بنگلہ دیش اور افغانستان کے درمیان آج مقابلہ

بنگلہ دیش اور افغانستان کے درمیان آج مقابلہ

(لندن سے افضل افتخار)ورلڈ کپ کا31 واں میچ آج بنگلہ دیش اور افغانستان کی ٹیموں کے درمیان کھیلا جائے گا یہ میچ ساؤتھمپٹن کرکٹ سٹیڈیم میں کھیلا جائے گا ورلڈ کپ میں اب تک افغانستان کی ٹیم چھ میچ کھیل چکی ہے اور آج وہ اپنے ساتویں میچ کے لئے میدان میں اترے گی جبکہ اسی طرح سے بنگلہ دیش کی ٹیم نے بھی اپنے ورلڈ کپ میں چھ میچ مکمل کرلئے اور آج اس کابھی ساتواں میچ ہی ہوگا آج کے میچ کے بعد ان ٹیموں نے اپنے دو، دو میچ اور کھیلنے ہیں اب تک کی ان دونوں ٹیموں کی کارکردگی پر نظر دوڑائی جائے تو افغانستا ن کی ٹیم ایونٹ سے باہر ہوگئی ہے اس نے اب تک اپنے ہر میچ میں بہت عمدہ پرفارمنس دینے کی کوشش کی اور پریکٹس میچ میں پاکستان کو شکست دینے کے بعد اس نے خطرہ کی گھنٹی بجا دی تھی اور اس نے اپنے کھیل سے شائقین کرکٹ کو بہت محظوظ کیا اور ہر ٹیم کے خلاف اس نے بہت اچھا کھیل پیش کیا مگر اس کے باوجود پوائنٹس ٹیبل پر اس کے پوائنٹس کم ہیں اور وہ بس اب اپنے میچ ویسے ہی کھیلے گی جیت کی صورت میں اس کو اس سے کوئی فائدہ نہیں ہوگا اسی طرح سے بنگلہ دیش کی ٹیم کی بات کی جائے تو اس کے لئے آج کا میچ بہت اہمیت کا حامل ہے اور رہ اس وقت ایسی پوزیشن پر ہے کہ وہ ورلڈ کپ کے سیمی فائنل مرحلہ تک کوالیفائی کرسکتی ہے مگر اس کے بھی چانس تقریبا نہ ہونے کے برابر ہیں مگر اس میچ میں کامیابی کی صورت میں امید کی جاسکتی ہے کہ وہ اس دوڑ میں شامل ہوجائے دونوں ٹیموں کے درمیان باہمی مقابلوں کی با ت کی جائے تو اب تک دونوں ٹیمیں سات مرتبہ ایک دوسرے کے مدمقابل آچکی ہیں ان میچز میں سے بنگلہ دیش کی ٹیم نے چار میچ اپنے نام کئے ہوئے ہیں اور تین میچوں میں افغانستان کی ٹیم نے کامیابی کا مزا چکھا ہے اس کامطلب یہ ہے کہ اغفان کرکٹ ٹیم بنگالی ٹیم سے کسی بھی طرح سے پیچھے نہیں ہے صرف ایک میچ کا ہی فرق ہے اب تک ورلڈ کپ میں باہمی مقابلوں کی بات کی جائے تو ایک میچ ان کے درمیان اب تک کھیلا جاچکا ہے جس میں بنگلہ دیش کی ٹیم نے کامیابی اپنے نام کی تھی اب تک چار سالوں میں ان ٹیموں کی کارکردگی پر نظر دوڑائی جائے تو اب تک ان کے درمیان چار سالوں میں پانچ میچ کھیلے جاچکے ہیں جن میں سے بنگلہ دیش کی ٹیم نے تین میچوں میں کامیابی اپنے نام کی ہوئی ہے جبکہ افغانستان کی ٹیم نے دو میچ اپنے نام کئے ہوئے ہیں اس طرح سے ورلڈ کپ میں اب تک کھیلے گئے میچز میں بنگلہ دیش کی ٹیم کو افغانستان کی ٹیم پر ایک میچ کی برتری حاصل ہے دونوؒں ٹیموں کے درمیان اب تک کھیلے گئے میچز میں زیادہ سے زیادہ سکور کی بات کریں تو اب تک بنگلہ دیش کی ٹیم نے افغانستا ن کیخلاف ایک میچ میں زیادہ سے زیادہ 279 رنز بنائے ہوئے ہیں اور افغانستان کی ٹیم کا بنگلہ دیش کے خلاف اب تک کا سب سے زیادہ سکور کا ریکارڈ258 رنز کا ہے اسی طرح سے اب تک کا دونوں ٹیموں کا ایک دوسرے کیخلاف کم سے کم سکور کی بات کریں تو بنگالی ٹیم نے اب تک سب سے کم سکو ر 138 رنز سکور کیا ہے جبکہ افغانستان کی ٹیم نے بنگلہ دیش کے خلاف اب تک کا سب سے کم سکور 119 رنز بنایا ہوا ہے اسی طرح سے آج کے میچ میں کامیابی کی بات کی جائے کہ کون سی ٹیم آج کے میچ کیلئے فیورٹ ہے تو بنگلہ دیش کی ٹیم کی اب تک کی کارکردگی اس کی نسبت بہت چھی رہی ہے اور اس کی بنیاد پر یہ کہا جاسکتا ہے کہ آج کے میچ میں کامیابی بنگلہ دیش کی ٹیم کے حصہ میں آئے گی مگر اس کے باوجود بھی میچ کاٹنے دار ہونے کی توقع ہے کیونکہ افغانستان کی ٹیم نے بھی اب تک بڑی ٹیموں کے خلاف بہت اچھی پرفارمنس کا مظاہرہ کیا ہے چاہے جیت اس کا مقدر نہیں بن سکی اس لئے بنگالی ٹیم کی جیت کے آج ستر فیصد امکانات ہیں جبکہ افغانستان کی ٹیم کے تیس فیصد ہیں آج کے میچ کے بارے میں افغانستان ٹیم کے کپتان گلبندین نے کہا ہے کہ ہم نے ورلڈ کپ میچز میں اپنی بہترین پرفارمنس دینے کی ہر ممکن کوشش کی ہے اور ہر میچ میں ہم نے بہت کچھ سیکھا ہے امید ہے کہ آج کے میچ میں پوری ٹیم محنت سے کھیلے گی اور ہم بنگلہ دیش کیخلاف میچ میں کامیابی حاصل کرنے میں کامیاب ہوجائیں گے آج کے میچ کے لئے بھرپور حکمت عملی تیار کی ہے دوسری جانب بنگلہ دیش ٹیم کے کپتان کاکہنا ہے کہ آج کامیچ بہت اہمیت کا حامل ہے افغانستان کی ٹیم کو کمزور نہیں سمجھتے اور پوری طاقت کے ساتھ میدان میں اتریں گے اور ہماری کوشش ہوگی کہ ہم آ ج کا میچ بڑے مارجن سے جیتنے میں کامیاب ہوجائیں اس کیلئے حکمت عملی تیار کرلی ہے ہر میچ ہی ہم جیت کا عز م لیکر میدان میں اتریں ہیں جس طرح سے اب تک پوری ٹیم نے ورلڈ کپ کے میچز میں پرفارم کیا ہے میں ان کی اب تک کی کارکردگی سے مکمل طور پر مطمئن ہوں اور آج میچ میں کامیابی کے لئے پرعزم ہوں۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی


loading...