بجٹ میں صوبہ کی ترقی کو ترجیح دی ، بلدیاتی انتخابات کارکردگی کی بنیاد پر جیتیں گے : جام کمال

بجٹ میں صوبہ کی ترقی کو ترجیح دی ، بلدیاتی انتخابات کارکردگی کی بنیاد پر ...

کوئٹہ(این این آئی)بلوچستان عوامی پارٹی کے مرکزی صدر و وزیراعلی بلوچستان جام کمال خان نے کہا ہے کہ بجٹ پاس ہونے کے بعد جولائی کے پہلے دس دن میںسکیموں پر ٹینڈر شروع کیے جائیں گے ، بلوچستان کی یکسر ترقی کا حامل بجٹ پیش کیا ہے کوئٹہ پیکج کے تحت ریکارڈ رقم مختص کی گئی ہے ، وفاقی حکومت سے ڈمیز ، گریڈ اسٹیشنز ، سڑکوں کا جال بچھانے سمیت دیگر منصوبے منظور کروانے کا کریڈٹ بلوچستان عوامی پارٹی کی حکومت کو جا تا ہے ،بی اے پی بلدیاتی انتخابات میں اپنی کارکردگی کی بنیاد پر کامیابی حاصل کریگی ۔یہ بات انہوں نے اتوار کو بلوچستان عوامی پارٹی کے مرکزی سیکرٹریٹ میں منعقدہ عید ملن پارٹی کے شرکاءسے خطاب کرتے ہوئے کہی اس موقع پر صوبائی وزراءمیر ظہور بلیدی ، نور محمد دمڑ ، میر ضیاءاللہ لانگو ، رکن صوبائی اسمبلی عبدالرشید بلوچ پارٹی کے بانی رہنماءسعید احمد ہاشمی ، میر عبدالکریم نوشیروانی ، میر عبدالروف رند ، میر اسماعیل لہڑی ، آغا عمر احمدزئی ، طاہر محمود خان ، سردار نور احمد بنگلزئی ، رامین محمدحسنی سمیت کارکنوں کی بڑی تعداد موجود تھی ، وزیر اعلی جام کمال خان نے کہا کہ بلوچستان عوامی پارٹی نے اقتدار میں آنے کے بعد اتحادی جماعتوں کے ساتھ ملکر بلوچستان کے مسائل کا دیرپا حل نکالنے کی بھر پور کوشش کی ہے ہم نے قلیل مدت میں ایسا بجٹ تشکیل دیا جو ہمارے منشور کی بھرپور عکاسی کرتا ہے ہمارے پیش کردہ بجٹ پر شاید ہی کوئی انگلی اٹھا سکتا ہے کیونکہ اس میں پورے بلوچستان کی ترقی کو ترجیح دی گئی ہے ہوسکتا ہے اکادکا علاقے میں کوئی اسکیم رہ گئی ہو لیکن اگر بجٹ کا جائزہ لیا جائے تو یہ ہر لحاظ سے ترقیاتی پہلووں کے عین مطابق ہے انہوں نے مزید کہا کہ بلدیاتی انتخابات میں ہم اپنی عوام دوست کاوشوں سے کامیابی حاصل کریں گے ہم نے صوبے کے اہم ترین شہر کوئٹہ کی ترقی کے لئے تاریخ کا سب سے بڑا ترقیاتی فریم ورک تشکیل دیا ہے صوبے میں تعلیم صحت روزگار سمیت تمام اہم مسائل کو حل کریں گے جبکہ ان علاقوں جہاں ہمارا ایک بھی ورکر نہ ہو انہیں بھی ترقی دیں گے انہوں نے کہا بلوچستان عوامی پارٹی وفاق کے ساتھ ملکر کر صوبے میں سڑکوں کی تعمیر ، مکران گریڈ اسٹیشن ، ڈیمز سمیت اہم مسائل حل کر رہی ہے وفاقی پی ایس ڈی پی میں منصوبے شامل کرنے کا کریڈٹ بھی بی اے پی کے سر جا تا ہے ماضی میں صرف سی پیک کے مغربی روٹ کی بات کی گئی ہم نے کوئٹہ ڑوب شاہراہ کے لیے 60 ارب روپے مختص کروائے ہیں اس موقع پر وزیر اعلی نے کارکنوں سے ملاقات کی اور انکے مسائل بھی سنے ۔

جام کمال

مزید : علاقائی


loading...