پی ٹی آئی ماضی کی مفلوج الحال معیشت کو استحکام دینے کیلئے کوشاں ہے: محمود خان

پی ٹی آئی ماضی کی مفلوج الحال معیشت کو استحکام دینے کیلئے کوشاں ہے: محمود خان

پشاور (سٹاف رپورٹر)وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے کہا ہے کہ کسی بھی قوم کو مسائل کی دلدل سے نکالنے اور اسے ترقی کی راہ پر لانے کے لئے دلیرا نہ اور وقتی طور پر کچھ مشکل فیصلوں کی ضرورت ہوتی ہے، پاکستان تحریک انصاف واحد سیاسی جماعت ہے جو گزشتہ ستر سالوں سے تباہ حال اداروں کا قبلہ درست کرنے اور ماضی کی مفلوج الحال معیشت کو استحکام دینے کے لئے کوشاں ہے، صوبائی حکومت اس سلسلے میں متعدد اصلاحاتی اقدامات کر چکی ہے اور بتدریج آگے بڑھ رہی ہے، باشعور عوام کے تعاون سے ترقی یافتہ اور خوشحال ملک کا خواب ضرورت شرمندہ تعبیر ہو گااور عوام جلد ریلیف محسوس کریں گے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے وزیراعلیٰ ہاؤس پشاور میں صوبے کے مختلف حلقوں سے تعلق رکھنے والے منتخب عوامی نمائندوں سے موجودہ ملکی صورتحال اور حکومتی پالیسیوں کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ گزشتہ کئی دہائیوں سے تباہی اور تنزلی کے شکار اداروں کو ٹھیک کرنا بلا شبہ ایک صبر آزما اورمشکل کا م ہے، تاہم تحریک انصاف نے اس چیلنج کو قبول کیا ہے اور عوام نے بھی اپنے مستقبل کے لئے تحریک انصاف پر اعتماد کیا ہے۔ محمود خان نے کہا کہ پی ٹی آئی عوام سے کئے گئے وعدوں کی تکمیل کے لئے گامزن ہے ہم نے پہلے کبھی اپنے منشور اور ویژن پر سمجھوتہ کیا ہے اور نہ آئندہ کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی حکومت نے جزوقتی اقدامات کی بجائے طویل المدتی منصوبہ بندی کا راستہ اختیار کیا ہے کیونکہ ہم پارٹی کو نہیں پاکستان کو مضبوط اور خوشحال دیکھنا چاہتے ہیں، سیاسی مفادات سے بالاتر ہوکر عوامی خدمت کا نظام متعارف کرایا ہے۔ محمود خان نے کہا کہ وہ مخالفین کے بے بنیاد اور غیر منطقی پروپیگنڈوں پر توجہ دینے کی بجائے اداروں کی اصلاح کے لئے کوشاں ہیں۔ یہ واحد صوبائی حکومت ہے جس نے حقیقی جمہوری طرز حکومت کی بنیاد رکھی، اداروں کو ان کے اصلی اختیارات کیمطابق فعال بنایا اور اختیارات کی نچلی سطح پر منتقلی یقینی بنائی، اس مجموعی عمل کو درجنوں پالیسیوں اور قوانین سے دیر پا بنایاتاکہ آئندہ کوئی بھی عوامی خدمات کے اداروں سے کھلواڑ نہ کر سکے، ہم بتدریج بہتر سے بہترین کیطرف گامزن ہے اور قومی ترقی و خوشحالی کیلئے اپنے اہداف کے حصول تک جدوجہد جاری رکھیں گے۔

مزید : صفحہ اول


loading...