سپریم کورٹ،ارادہ قتل کے ملزم کی ضمانت منسوخی کیخلاف درخواست خارج

سپریم کورٹ،ارادہ قتل کے ملزم کی ضمانت منسوخی کیخلاف درخواست خارج
سپریم کورٹ،ارادہ قتل کے ملزم کی ضمانت منسوخی کیخلاف درخواست خارج

  


اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ آف پاکستان نے ارادہ قتل کے ملزم عبدالرحمان کی ضمانت منسوخی کیخلاف درخواست خارج کر دی،چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ آپ چاہتے ہیں کہ ٹرائل سے پہلے ہی ملزم کو سزا دے دی جائے، آپ کی میڈیکل رپورٹ کوبھی چیلنج کیا جا سکتا ہے کہ وہ درست ہے کہ نہیں، ایک آدمی کو چارافراد فائرکرتے ہیں کیسے کہہ سکتے ہیں کہ کس کا فائراس کو لگا۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں ارادہ قتل کے ملزم عبدالرحمان کی ضمانت کے خلاف درخواست پرسماعت ہوئی،چیف جسٹس کی سربراہی میں 2 رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی،ٹرائل کورٹ اور ہائیکورٹ نے ملزم عبدالرحمان کو ضمانت پر رہا کر دیا تھا،ملزم عبدالرحمان پر 2018ساتھیوں سمیت لیاقت علی کو فائرنگ کرکے زخمی کرنے کا الزام ہے،لیاقت علی نے ملزم عبدالرحمان کی ضمانت کے خلاف سپریم کورٹ میں درخواست دائرکر رکھی ہے۔

وکیل لیاقت علی نے دوران سماعت دلائل دیتے ہوئے کہا کہ ملزم نے ارادہ قتل سے لیاقت علی پر فائرنگ کی،چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہاکہ آپ چاہتے ہیں کہ ٹرائل سے پہلے ہی ملزم کو سزا دے دی جائے، آپ کی میڈیکل رپورٹ کوبھی چیلنج کیا جا سکتا ہے کہ وہ درست ہے کہ نہیں، ایک آدمی کو چارافراد فائرکرتے ہیں کیسے کہہ سکتے ہیں کہ کس کا فائراس کو لگا،فائر بھی پیچھے سے لگا ہے اور رات کا وقت تھا،سپریم کورٹ نے ملزم عبدالرحمان ضمانت منسوخی کے خلاف درخواست خارج کردی۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد